Author Topic: Leo (Horoscope) برج اسد  (Read 905 times)

0 Members and 1 Guest are viewing this topic.

Online Master Mind

  • 4u
  • Administrator
  • *
  • Posts: 4468
  • Reputation: 85
  • Gender: Male
  • Hum Sab Ek Hin
    • Dilse
    • Email
Leo (Horoscope) برج اسد
« on: November 22, 2010, 04:42 AM »
رج اسد
دائرئہ بروج میں اس کا نمبر پانچواں ہے اور اپنی ماہیت میں یہ ثابت(جامد) ہے۔ آتشی تکون کا دوسرا رکن برج اسد حاکمیت، طاقت و توانائی، جرات و بہادری، اعلیٰ اقدار اور بلند مقامات کا مظہر ہے۔ اعضائے جسمانی میں اس کا تعلق دل اور پشت سے ہے۔ اس کے زیراثر پیدا ہونے والے افراد مضبوط جسمانی ساخت، زبردست طاقت، قوت برداشت اور ثابت قدمی کے لیے مشہور ہوتے ہیں۔ یہ لوگ کسی بیماری سے کم زور ہو جانے کے بعد بہت جلد تن درست و توانا ہونے کی فطری خصوصیت رکھتے ہیں۔

اسد کا طرہ امتیاز

برج اسد کے تحت پیدا ہونے والے افراد کا نمایاں وصف انا اور حکمرانی ہے۔ محبت کے معاملات میں بھی یہ لوگ عاشق تو ہو سکتے ہیں لیکن معشوق نہیں بن سکتے۔ قیادت کا رجحان ان میں پیدائشی طو رپر موجود ہوتا ہے۔ ایمان داری اور وفاداری ان کی سرشت میں شامل ہے۔ کم تر اور گھٹیا چیزوں کی ان کی زندگی میں کوئی گنجائش نہیں۔ ہمیشہ کوئی اعلیٰ مقام یا شان دار چیزیں ان کی نگاہوں کا مرکز ہوں گی۔ ان کے خیالات ہمیشہ اپنے وسائل سے زیادہ بلند ہوتے ہیں۔ دوراندیشی اور سخاوت، آزاد مزاجی، پختہ عزم اور مضبوط ارادے ان کا طرئہ امتیاز ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ احساس تفاخر اور امتیاز کا جذبہ اور خوداعتمادی بھی ان میں حد سے زیادہ ہوتی ہے۔ اطاعت اور فرماں برداری کو پسند کرتے ہیں جب کہ سرکشی اور بغاوت یا اپنی رائے سے اختلاف کرنے والے نافرمان لوگوں کے لیے ان کے دل میں کوئی گنجائش نہیں ہوتی ہے۔

برج سرطان اور اسد کی حد اتصال
اگر آپ کی پیدائش 19 جولائی سے 25 جولائی تک ہوئی ہے تو آپ برج سرطان اور اسد کی حد اتصال پر پیدا ہوئے ہیں اور آپ کی شخصیت آبی برج سرطان اور آتشی برج اسد کے امتزاجی اثرات کادل چسپ نمونہ ہے۔ سرطان اور اس کے سنگم پر پیدا ہونے والوں میں متلون مزاج شخصیت کی حیثیت سے ابھرنے کا رجحان پایا جاتا ہے۔ یہ وہ لوگ ہیں جنہیں قرار نہیں آتا۔ یہ جلدی جلدی ایک حد سے دوسری حد تک چھلانگ لگاتے رہتے ہیں۔ دراصل حرکت کی بہت سی صورتیں تبدیلی اور مسلسل تبدیلی اس سنگم پر پیدا ہونے والوں کی خصوصیت ہوتی ہے، ناصرف جسمانی حرکت مثلاً سفر، رہائش کی تبدیلی، مہم جوئی اور اسپورٹس وغیرہ، بلکہ خیالات اور جذبات میں بھی تغیر اور تبدیلی ان کا خاصہ ہے۔ یہ لوگ ایک لمحے میں شرمیلے اور الگ تھلگ اور دوسرے ہی لمحے چست اور متحرک اور سرگرم عمل نظر آتے ہیں۔ درحقیقت یہ سرطان کی آبی حسیت اور اسد کی آتشی غضب ناک خصوصیت کی عکاسی ہے۔ ان لوگوں کو اپنے اتار چڑھاﺅ کی شدت پر قابو پانا ہے اور اپنی سرگرمیوں کو دھیما کر کے انہیں سیدھے راستے پر رکھنا چاہیے، ساتھ ہی اپنے اختلافی رجحانات کو مصالحت اور مفاہمت کے سانچے میں ڈھالنا چاہیے۔
اس عرصے میں پیدا ہونے والے افراد میں ارتعاش، توانائی اور جوش و خروش کا رجحان پایا جاتا ہے۔ انہیں اس کی ضرورت ہے کہ یہ چیلنجوں کو تلاش کریں اور ان پر حاوی ہونے کی کوشش کریں۔ انہیں یاد رکھنا چاہیے کہ نشیب و فراز سے قطع نظر استحکام کے نتائج نہایت عمدہ ہوتے ہیں۔ خودنظمی کو پروان چڑھائیں مگر کبھی اپنی بے ساختگی کو نہ کھوئیں۔ ماضی کے مسائل اور مستقبل کی توقعات کو بھول کر حال میں زندہ رہنے پر زیادہ توجہ مرکوز نہ کریں۔
سرطان اور اسد کی حداتصال پر پیدا ہونے والی دنیا کی مشہور شخصیات میں سکندراعظم، ماﺅنٹ ایورسٹ کی چوٹی سر کرنے والے پہلے کوہ پیما سر ایڈمنڈ ہیلری، شہرئہ آفاق ناول نگار ارٹسٹ ہیمنگوے، ایتھوپیا کے بادشاہ ہیل سلاسی، بحراوقیانوس پر پرواز کرکے اسے عبور کرنے والی پہلی امریکن خاتون ایملا راہٹ اور سائمن بولیور شامل ہیں۔

اسد شخصیت و کردار
دائرئہ بروج میں برج اسد نہایت طاقت ور اور اثرآفرین ہے۔ سورج آپ کا حاکم سیارہ ہے اور اس ناتے ساری دنیا کو آپ کے قدموں میں ہونا چاہیے۔ آپ سے عظیم کارناموں، شان دار اور حیرتانگیز کاموں کی توقع رکھی جا سکتی ہے۔ آپ فطری طو رپر ایک قائد ہیں، ہوش ربا صلاحیتوں کے مالک، اختیارات تفویض کرنے والے نیز ذمے داری اٹھانے کی بلا کی قدرت آپ رکھتے ہیں۔ دوسروں کے احساسات کو اچھی طرح سمجھنا اور ان کی پذیرائی کرنا، ہم دردی، خیال آفرینی اور بے حد رحم دلی کا مظاہرہ کرنا آپ کی شخصیت کا حصہ ہے، تاہم آپ میں رعونت ہے اور آپ خوشامد پسند بھی ہیں۔ ساتھ ہی آپ کے مزاج میں جانب دارانہ رویوں کا رجحان بھی موجود ہے۔برج اسد اولوالعزمی اور فیاض، اعتبار، محبت اور دوستوں کی صحبت کی انتہائی پسندیدگی کی نمائندگی کرتا ہے لیکن ان تمام باتوں میں آپ اپنے مخصوص معیارات کو بھی نظرانداز نہیں کرتے۔ یہ تمام کام نہایت خلوص اور سنجیدگی سے انجام دیتے ہیں۔ آپ کو مرکز نگاہ بننا بہت اچھا لگتا ہے۔ آپ اسپورٹس اور دیگر علوم و فنون کے بھی شائق ہیں۔ آپ کی فطری صلاحیتوں کی وجہ سے آپ کے اندر خودسری اور سرکشی کا رجحان پایا جاتا ہے۔ شاہانہ کرّوفر کا انداز بھی آپ کی خودسری کا سبب ہو سکتا ہے۔ آپ کو ہوش مندی و دانش مندی کا دامن کبھی نہیں چھوڑنا چاہیے۔
آپ کی شخصیت اور فطرت دوستانہ، مہربان اور درخشاں ہے۔ جیسا کہ آپ کا سیارہ روشن و تاباں سورج ہے۔ آپ دوسروں کے قریب ہونا، ان کی خوشیوں میں شریک ہونا اور اپنی خوشیوں میں انہیں شریک کرنا پسند کرتے ہیں۔ فیاضی کے ساتھ کبھی کبھی نمود و نمائش بھی آپ کے کردار کا خاصہ ہے۔ اگرچہ آپ دوسروں کے درمیان نمایاں، باوقار اور مرکز نگاہ بنے رہنا چاہتے ہیں مگر آپ کبھی بھی ایسی کوئی حرکت نہیں کرتے جو احمقانہ کہی جا سکے۔ اس طرح دوسروں کی احمقانہ باتیں یا حرکات بھی آپ کو سخت ناپسند ہوتی ہیں۔ شروع سے آخر تک توجہ کا مرکز بنے رہنے میں سب سے اہم نکتہ داد و تحسین وصول کرنا ہے نہ کہ تمسخر کا نشانہ بننا۔ آپ کے نزدیک عزت اور احترام کی بہت اہمیت ہے۔ آپ زندگی بھر اس کے لیے جتن کرتے رہتے ہیں اور اس حوالے سے کبھی کوئی سمجھوتا نہیں کرتے۔ آپ ہمیشہ زندگی سے بھرپور لطف اٹھانا چاہتے ہیں لیکن اگر آپ کو وہ حیثیت یا مرتبہ مل جائے جس کے آپ متلاشی ہیں تو اسی پر قانع ہو جاتے ہیں۔ حالات اطمینان بخش ہوں تو اپنے معمولات کے استحکام سے لطف اندوز ہونے لگتے ہیں۔ آتشی برج ہونے کے سبب آپ کسی بھی وقت بے حد پُرجوش اور مغلوب الغضب ہو سکتے ہیں۔

عشرہ اوّل
اگر آپ کی پیدائش 26 جولائی سے 2 اگست تک ہوئی ہے تو آپ برج اسد کے پہلے عشرے میں پیدا ہوئے ہیں۔ اس عشرے کا ذیلی حکمراں بھی سیارہ شمس ہی ہے، لہٰذا آپ ایک بھرپور اسد شخصیتکے مالک ہیں۔
برج اسد کے عشرئہ اوّل کا مرکزی تصور ”حاکمیت“ ہے۔ اس عرصے میں پیدا ہونے والے سال بھر کے سب سے طاقت ور اور خودمختار لوگوں میں شما رکیے جاتے ہیں۔ اگرچہ بہت سے لوگوں میں قائدانہ صلاحیتیں ہوتی ہیں لیکن عام طور سے انہیں دوسروں پر حکم چلانے سے زیادہ غرض یا دل چسپی نہیں ہوتی بلکہ اپنے آپ کو منوانے اور سنجیدگی سے لیے جانے سے زیادہ دل چسپی ہوتی ہے۔ ایک اہم بات یہ کہ ان کی توانائیوں کا بیشتر اخراج باہر سے زیادہ اندر کی طرف ہوتا ہے، یعنی وہ ان سے اپنی طاقت اور صلاحیتوں کو فروغ دینے کا کام لیتے ہیں۔ اکثر ان کے اہداف ذاتی نوعیت کے ہوتے ہیں جن کے حصول کے لیے وہ نہایت بے رحمی اور ثابت قدمی سے کوشاں رہتے ہیں۔ خود اپنی ہی پچھلی کامیابیوں پر سبقت لے جانا، یعنی خود اپنا ہی سابقہ ریکارڈ توڑنا ان کی نمایاں خصوصیت ہے۔ دراصل وہ اکثر اپنے ماحول پر حکمرانی کرنے کی ضرورت محسوس کرتے ہیں۔ ان لوگوں کو اکثر دوسروں کے معاملات میں فیصلہ کرنے کے لیے بلایا جاتا ہے۔ ان میں بلندی کی طرف پرواز کرنے کا رجحان پایا جاتا ہے اور وہ بہت ہی بااثر اور طاقت ور مقام پر بھی پہنچ سکتے ہیں۔ زندگی کے چیلنجوں سے نمٹنے کے وہ کچھ زیادہ ہی اہل ہوتے ہیں لیکن بعض صورتوں میں ان کی پیشہ ورانہ زندگی ان کے ذاتی اہداف اور حقیقی دل چسپیوں کو نگل لیتی ہے۔ اس کا نتیجہ بے شک گہری مایوسی اور بے چینی کی صورت میں نکل سکتا ہے۔
عشرئہ اوّل میں پیدا ہونے والے اسد افراد اپنے بچوں کے لیے لازمی طو رپر ایک حاکم یا مالک و مختار کا کردار ادا کرتے ہیں۔ ان کا ایک مسئلہ یہ بھی ہے کہ وہ اپنی کامیابی کی دھن میں خود کو کسی فرم یا ادارے کے لیے ناگزیر بنا لیتے ہیں۔ ان کے لیے بہترین مشورہ یہ ہے کہ لوگ جیسے بھی ہیں انہیں اسی طرح قبول کرلیں، مثبت بھی اور منفی بھی۔ تھوڑی سی خوش طبعی آپ کی اہمیت کو بڑھا سکتی ہے۔
اس عشرے میں پیدا ہونے والی چند نام ور شخصیات یہ ہیں: شہرئہ آفاق ڈراما نگار جارج برنارڈشا، مشہور ماہر نفسیات کارل یونگ، نوبل انعام یافتہ امریکی ماہر معاشیات و قانون بلٹن فریڈمنٹ، اٹلی کا ڈکٹیٹر مسولینی، امریکی فورڈ کمپنی کا مالک ہنری فورڈ، سابق امریکی صدر جان ایف کینیڈی کی بیوہ جیکی اوناسس، شہرئہ آفاق کرکٹر سر گارفیلڈ سوبر، مشہور اداکار پیٹررٹول، آرنلڈ شیوارزنیگر اور موجودہ دور کے عظیم ریسلر اور کئی بار عالمی چمپئن کا اعزاز حاصل کرنے والے ٹرپل ایچ۔

برج اسد کا عشرہ دوم
اگر آپ برج اسد کے زیراثر 3 اگست سے 10 اگست تک پیدا ہوئے ہیں تو آپ کا تعلق برج اسد کے دوسرے عشرے سے ہے، جس کا ذیلی حاکم سیارہ مشتری ہے جو خوش قسمتی اور الہامی دانش کا سیارہ کہلاتا ہے۔ شمس کے ساتھ مشتری کے اثرات کا امتزاج نہایت شان دار نتائج دیتا ہے، خاص طور سے مادی آسائشوں، دولت و ثروت، سفر، سماجی رتبے اور حیثیت کے لیے یہ عشرہ نہایت سازگار ہے۔ اس عشرے کا مرکزی خیال ”متوازن طاقت“ ہے۔ مشتری کا اثر آپ کو مذہبی موضوعات میں دل چسپی لینے پر مجبور کر سکتا ہے اور آپ کی جبلی استعداد تقریباً اضافی حس کی سرحد کو چھو سکتی ہے، یعنی آپ مذہبی معاملے میں نہایت شدت پسند بھی ہو سکتے ہیں اور قطعی لاتعلق بھی۔ اس عشرے کے زیراثر آپ لذت طلب اور دنیا کی عمدہ ترین چیزوں سے رغبت رکھنے والے ہو سکتے ہیں۔ بینکنگ اور دیگر مالیاتی اداروں سے آپ کی انتظامی صلاحیتیں انصاف کر سکتی ہیں۔
آپ اپنی صلاحیت اور طاقت پر فخر کرتے ہیں اور عام طور سے اس کو تعمیری انداز میں استعمال کر کے لطف اندوز ہوتے ہیں۔ اسی طرح اکثر ایسے چیلنجوں یا سرگرمیوں کی طرف کھنچتے ہیں جو نقصان دہ حتیٰ کہ خطرناک ہو سکتی ہیں۔ آپ کو مطلوبہ ہدف سے اتنی دل چسپی نہیں ہوتی جتنی ہدف تک پہنچنے کی وجہ سے ہوتی ہے۔ آپ کوئی منصوبہ شروع کریں تو اسے مشکل ہی سے ترک کرتے ہیں۔ آپ اتنے مستقل مزاج اور برداشت کا مادہ رکھنے والے ہیں کہ کسی مشکل منصوبے میں تادیر پھنسے رہ سکتے ہیں۔ بہرحال کبھی کبھی آپ کی ضد اور ہٹ دھرمی آپ کے لیے نقصان دہ بھی ہو سکتی ہے۔ آپ کو چاہیے کہ حالات میں خرابی کو جوں کا توں نہ رہنے دیں، اپنے مزاج پر قابو رکھیں۔ گرم مزاجی آپ کو غیرمتوازن کر سکتی ہے اور آپ کے حریف کو فائدہ پہنچا سکتی ہے۔ کم زوریوں سے نفرت نہ کریں، سمجھوتا اور معاملہ فہمی کی خوبیوں کو پروان چڑھائیں۔
اس عشرے میں پیدا ہونے والی چند نام ور شخصیات یہ ہیں: برطانوی شاعر الفریڈ ٹینی سن، شیلے، شہرئہ آفاق فرانسیسی افسانہ نویس موپاساں، چاند پر پہلا قدم رکھنے والے خلاباز نیل آرمسٹرانگ، پنیسلین کا موجد الیگزینڈر فلیمنگ، نوبل انعام یافتہ سائنس داں ارنسٹ لارنس، فلم ساز و اداکار ایڈ فشر، اداکار ڈٹسن ہوف مین اور رسوائے زمانہ جاسوسہ ماتاہری۔

اسد کا عشرہ سوم
برج اسد کے عرصے میں 11 اگست سے 18 اگست تک پیدا ہونے والوں کا تعلق اسد کے تیسرے عشرے سے ہے۔ اس عشرے پر سیارئہ شمس کے ساتھ سیارہ مریخ کے اثرات بھی پڑ رہے ہیں جو طاقت اور جنگ سے متعلق ہے اور ان لوگوں کو اپنے مقاصد کے حصول میں جارحانہ انداز اختیار کرنے پر مجبور کرتا ہے۔
برج اسد کے اس تیسرے عشرے کا مرکزی نکتہ خیال ”قیادت“ ہے۔ اس دوران میں پیدا ہونے والے افراد پیدائشی لیڈر ہوتے ہیں۔ ان میں سے بعض حکمران بننے اور دوسروں پر برے یا بھلے کی خاطر طاقت کا استعمال کرنے میں دل چسپی رکھتے ہیں جب کہ اس عشرے کے دوسرے لوگوں کو قیادت یا حکمرانی سے کوئی دل چسپی نہیں ہوتی بلکہ وہ اپنے خیالات و افکار تمثیل و اخلاقیات کے ذریعے دوسروں کی رہنمائی کرنا چاہتے ہیں۔
عشرئہ سوم والے اسدی افراد گہرے اور جذباتی طور پر پے چیدہ لوگ ہوتے ہیں۔ وہ اکثر شایداپنے اندر وجود آتش فشاں کے سبب اچانک بے پناہ سرگرم عمل ہو جاتے ہیں بلکہ غصے سے پھٹ پڑتے ہیں، نیز تشدد پر بھی آمادہ ہو سکتے ہیں۔ اگرچہ وہ بڑی مقناطیسی شخصیت کے حامل اور بڑے پُرکشش ہوتے ہیں مگر ان کے دوستوں اور رفقاکار کے لیے انہیں سمجھنا بہت مشکل ہوتا ہے۔ یہ لوگ حد سے زیادہ حساس ہو سکتے ہیں۔ درحقیقت وہ اپنے طاقت ور احساسات کے رحم و کرم پر ہوتے ہیں۔ یہ لوگ زندگی کی انتہائی دنیاوی صورت حال، یعنی روزمرہ کے معمولات میں بھی دلیری یا مہم جوئی کے عناصر ڈھونڈ لیتے ہیں اور اکثر و بیشتر ایک عام سی فضا کو بھی ایک خاص تاثر بلکہ ایک شان عطا کر دیتے ہیں۔ اس طرح وہ خود سب کی نگاہوں کا مرکز بن جاتے ہیں۔ یہ لوگ اکثر کسی اعلیٰ مقصد یا فکر کے لیے کام کرتے پائے جاتے ہیں۔ کچھ لوگ انہیں خودغرض سمجھتے ہیں لیکن ان کی سرگرمیاں ان سے جس طرح کے ایثار، ذاتی اخلاص اور وفاداری کا تقاضا کرتی ہیں، وہ ان الزامات کو جھٹلاتی ہیں۔ اپنی حد درجے خود اعتمادی کے باعث عشرئہ سوم کے عشرے میں پیدا ہونے والے ایسے لوگ بھی ہیں جو اپنے بارے میں یہ سمجھتے ہیں کہ ان سے کبھی کوئی غلطی سرزد ہو ہی نہیں سکتی یا یہ کہ انہیں کبھی کوئی نقصان نہیں پہنچ سکتا۔ ان لوگوں کو غیرحقیقت پسندانہ رجحانات سے گریز کرنا چاہیے اور اپنے حاکمانہ اور غالبانہ پہلو کو دھیما کرنے کی کوشش کرنی چاہیے۔عشرئہ سوم کے عرصے میں پیدا ہونے والی چند مشہور شخصیات یہ ہیں: نپولین بونا پارٹ، فیڈل کاسترو، برطانوی سیاست دان جیمز ہارڈی، پاکستان کے سابق جنرل ضیاءالحق اور موجودہ صدر مملکت پرویز مشرف، سابق وزیر اعظم پاکستان محمد خان جونیجو، غلام مصطفی جتوئی، لارنس آف عریبیہ، ناول نگار سر والٹر اسکاٹ، پروفیسر عبدالسلام خورشید، دیوان سنگھ مفتون، آغا شورش کاشمیری، مدیر نقوش محمد طفیل، سید وقار عظیم، شہرئہ آفاق ہدایت کار الفریڈ ہچکاک، سیسل بی ڈیمل، رومن پولانسکی، گلوکارہ واداکارہ میڈونا، اورمے ویسٹ، مصورہ اینا مولسکا احمد، شاعر صبا اکبر آبادی، اختر انصاری اکبر آبادی، روحانی پیشوا سیدنا طاہر سیف الدین، بیگم سلمیٰ تصدق حسین، صالحہ عابد حسین اور وجے لکشمی پنڈت۔

مثبت اور منفی خصوصیات.... ایک نظر
اسد شخصیت اپنی مثبت خصوصیات میں فراخ دل اور سخی، باوقار، گرم جوش اور عاشق مزاجی، وفادار اور خود شناس، چست اور متحرک فن کار، ڈرامائی اور شاہانہ طور طریقوں کی حامل ہوتی ہیں جب کہ ان کی منفی خصوصیات میں شیخی، ضرورت سے زیادہ پُراعتمادی، تکبر اور تشدد، غرور و خودپسندی، بے صبرا پن اور موڈی ہونا شامل ہے
« Last Edit: March 19, 2013, 05:39 AM by Master Mind »

Online Master Mind

  • 4u
  • Administrator
  • *
  • Posts: 4468
  • Reputation: 85
  • Gender: Male
  • Hum Sab Ek Hin
    • Dilse
    • Email
Re: Leo (Horoscope) برج اسد
« Reply #1 on: March 19, 2013, 05:39 AM »

شوہر

اسد مرد ایک مستحکم رائے کا حامل ہوتا ہے۔ اس کی محبت بہت گہری اور غالبانہ ہوتی ہے لیکن وہ سمجھتا ہے کہ اس کا ہر فرمان ایک قانون ہے۔ وہ ایک ایسی بیوی کو ہرگز پسند نہیں کرے گا جو اس کی وفادار اور اطاعت گزار نہ ہو۔ بیوی کے انتخاب میں اسد مرد اپنے اعلیٰ معیار کا پورا خیال رکھتے ہیں۔
ایک اوسط درجے کا اسد مرد بہت اچھا شوہر ہوتا ہے۔ اس کی سخاوت اور اس کا بارعب اور پُروقارانداز، عاشقانہ طور طریقے اور جذباتی وفاداری زندگی کا ایک بہت بڑا مسئلہ ہے۔ مثبت خصوصیات کا حامل اسد مرد حکم چلانے، تنقید کرنے اور لعن طعن کرنے والی بیوی سے ناخوش رہتا ہے جب کہ وہ اپنی بیوی کو قابل فخر انداز میں دوسروں کے سامنے لانا چاہتا ہے۔ وہ چاہتا ہے کہ اس کی بیوی خاندان اور سماجی حلقوں میں نمایاں نظر آئے اور اس کے پاس دنیا کی بہترین اشیا موجود ہیں۔ اپنی ذات کے لیے وہ ہر اسٹیج پر مرکزی حیثیت چاہتا ہے تاکہ گھریلو اور خاندانی زندگی اس کی ذات کے گرد گھومتی رہے۔ وہ کسی مرحلے پر بھی اپنی بے عزتی یا حکم عدولیت برداشت نہیں کر سکتا۔

اسد بیوی

برج اسد اور حسن لازم و ملزوم ہیں، لہٰذا ایک اسد عورت نہایت شان دار بیوی ہوتی ہے۔ اس کا زاویہ نگاہ شاہانہ ہوتا ہے۔ سماجی حسن و وقار اس کا طرئہ امتیاز ہے۔ وہ اعلیٰ درجے کی منتظم ہوتی ہے اور ایک بڑے خاندان کا نظم و ضبط سنبھال سکتی ہے۔ سماجی تقریبات یا خاندانی محفلوں میں اوّل مقام حاصل کر لیتی ہے۔ محبت کے معاملات میں وہ جذباتی اور رقیبانہ مزاج رکھتی ہے۔ پائیدار محبت اور ایثار و قربانی اس کا شیوہ ہے۔ وہ عطا کرنے والی، محسوس کرنے والی اور خیر و برکت والی ہوتی ہے۔ اس کے خاندان والے اس کے پیار و محبت اور الطاف و عنایات کے لیے اس کے احسان نہیں چکا سکتے۔ شوہر سے وفاداری اور اس کی دیکھ بھال کے حوالے سے اس کا رویہ قابل ستائش ہوتا ہے۔ عموماً اسد بیوی اپنے شوہر پر حکومت کرتی ہے۔ اگر شوہر ضرورت سے زیادہ حکم چلانے والا اور بدمزاج نہ ہو، خصوصاً اس کی عزت نفس کو ٹھیس نہ پہنچائے تو وہ اس کی خوشیوں کے لیے کچھ بھی کر سکتی ہے۔ اسے ایک سرگرم زندگی کی ضرورت ہوتی ہے اور وہ کوئی کام سست رفتاری سے نہیں کرتی۔ اپنے جذبہ رقابت کے تحت بعض اوقات وہ اپنے شک کا کھلا اظہار کر کے شوہر کو پریشان کر سکتی ہے۔ اگر اسد عورت کو خوش قسمتی سے ایک اچھا مرد مل جائے تو اس کی جملہ خوبیاں اجاگر ہو جاتی ہیں۔ پھر وہ دل وجان سے اپنے شوہر کی خدمت کرتی ہے۔

سد باپ

آپ کے لیے باپ بننا بے حد مسرت کا باعث ہے۔ آپ خاصی حد تک اپنے بچوں سے اور ان کی سرگرمیوں سے خود کو ہم آہنگ رکھتے ہیں۔ ان کے لیے آپ کے جذبہ محبت میں بڑی گرم جوشی ہے اور آپ کو ان کی رفاقت بہت اچھی لگتی ہے۔ آپ انہیں اپنے ہم راہ سیر و تفریح کرانے، نیز ثقافتی شوز اور کھیل سے متعلق سرگرمیاں دکھانے لے جاتے ہیں۔ بہتر ہوگا کہ انہیں بار بار کسی چیز کی تاکید کرنے، حد سے زیادہ روک ٹوک کرنے یا ان پر برہم ہونے سے گریز کریں۔ نیز ان سے کوئی ایسی توقع نہ رکھیں جسے پورا کرنا ان کے لیے ممکن نہ ہو۔ ان کی حوصلہ افزائی کرنے میں کشادہ دلی کا مظاہرہ کریں۔

اسد دوست

بحیثیت دوست آپ صحیح معنوں میں نہایت ہی عمدہ اور مہربان، فیاض و باوقار ہیں۔ آپ کےخلوص اور آپ کی گرم جوشی سے کبھی کسی دوست کو مایوسی نہیں ہوتی۔ آپ اپنے دوستوں کے لیے ایک مثال، ایک نمونہ ہیں۔ احباب آپ کی دوستی پر فخر کرتے ہیں۔
برج اسد کی محبت کے رنگ ڈھنگ
جہاں تک محبت کا تعلق ہے، آپ بے حد رومان پسند ہیں اور خودنما واقع ہوئے ہیں۔ محبوب کو لبھانے اور رجھانے کے لیے آپ سے زیادہ کوئی نہیں بنتا سنورتا ہوگا اور کوئی عشق کے رموز سے نہ تو اتنا واقف ہوگا اور نہ ہی اس کی اتنی پروا کرتا ہوگا جتنی کہ آپ کرتے ہیں، لہٰذا اب کون سی کسر رہ گئی ہے جو کسی بے کیف سے بے کیف رومانس کو بھی قابل ذکر نہ بنا دے۔ آپ اپنے دوست یا محبوب کی خاطر کچھ بھی کر سکتے ہیں، اپنی زندگی اپنی محبوب ترین ہستی کے لیے وقف کر سکتے ہیں۔
ایک اسد شخصیت کی حیثیت سے آپ ہر کام اسٹائل سے کرنا پسند کرتے ہیں، جو صنف مخالف کو عام طور سے بہت متاثر کرتے ہیں، لہٰذا آپ کا برج محبت اور رومان کے لیے بہترین اور موزوں ترین ہے۔ آپ کے سارے معاشقے اعلیٰ پائے کے ڈرامے ہیں جن میں آپ اپنا کردار مکمل خوبی سے نبھانا جانتے ہیں۔ ایک اوسط درجے کے اسد میں صنف مخالف کے لیے زیادہ کشش ہے اور وہ ہر پہلو سےایک نظریاتی اور مثالی عاشق ہے، یعنی جذباتی، جسمانی، غرض ہر اعتبار سے آپ کی فیاضی اور کشش صنف مخالف کو پاگل کر سکتی ہے۔ بہرحال آپ ایک اچھے عاشق اور شریک حیات ثابت ہوتے ہیں۔ یہ الگ بات ہے کہ شریک حیات کی حیثیت سے آپ کے اندر حق ملکیت جتانے کا رجحان پایا جاتا ہے۔ اسد خواتین کو اس اعتبار سے محتاط رہنا ہوگا کہ ان کا یہ رجحان شدت نہ اختیار کرے۔ اپنے جیون ساتھی سے بہت زیادہ کی توقع مت رکھیں۔
ان تمام خوبیوں کے باوجود عموماً اسد افراد شادی کے معاملے میں زیادہ خوش قسمت ثابت نہیں ہوتے اور اس کی وجہ یہ ہے کہ وہ غلط لوگوں پر بھروسا کر لیتے ہیں۔ عموماً یہ لوگ محبت کے معاملات میں غیردانش مندانہ طریقے اور نہایت جوش و خروش کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ انسانی فطرت کے ظاہری پہلوﺅں پر ضرورت سے زیادہ بھروسا کر لیتے ہیں۔
اسد افراد محبت کی زندگی میں بالعموم بڑے سرگرم عمل ہوتے ہیں اور اپنی محبت کا عملی مظاہرہ کرتے ہیں لیکن زیادہ سنجیدہ لوگوں سے اپنے تعلقات برائے نام رکھتے ہیں۔ انہیں زیادہ ذہین اور غیرروایتی لوگ بھی پسندنہیں ہوتے۔ ایک ساتھی کی حیثیت سے اسد مرد یا عورت سیاسی یا سماجی اعتبار سے زیادہ باشعور ہوتی ہے۔ اگر آپ کسی اسد مرد یا عورت سے شادی کر لیتے ہیںتو اس کی آزادی اور پیار کرنے کی عاد ت پر قابو پانا آپ کے لیے ایک چیلنج بنا رہے گا۔ اس کے ساتھ ہی اس بات کا بھی خیال رکھیں کہ کہیں اسد ہی آپ کا آقا نہ بن جائے۔

اسد اور حمل کا ساتھ

دونوں کا عنصر آگ ہے جو ایک دوسرے کے لیے تقویت کا باعث ہوگا۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابق دونوں بروج کے درمیان موافق زاویہ نظر موجود ہے۔ حمل شخصیت اپنے مثبت پہلوﺅں میں باہمت، نڈر اور بے خوف، سرگرم، باصلاحیت، بے چین اور تیز و طرار اور صاف ذہن کی مالک ہے جب کہ اس کی منفی خصوصیات میں خودغرضی، بے صبرا پن، غرور، خودبینی، ظلم و تشدد، حسد، غلبہ پسندی وغیرہ نمایاں ہیں۔
اسد اور حمل کا تعلق نہایت گرم جوش اور شان دار ہے۔ شیر(اسد) مقابلہ کرنے یا جیتنے میں بالکل وقت نہیں ضائع کرتا۔ اس کا اصل مقام بلندی پر ہے۔ مینڈھا(حمل) بھی فاتح ہے۔ جیتنا اس کا شغل ہے۔ اس کی اولوالعزمی اسے بھی بلندی کی طرف لے جاتی ہے، لہٰذا دونوں ہمیشہ بلندیوں پر ہی نظر آئیں گے اور نت نئے کارنامے انجام دینے میں مصروف ہوں گے مگر اس بات کا احتمال ہے کہ جلد ہی تھک جائیں۔ انہیں تھکن سے بچنا چاہیے۔ دونوں ہی تعریف اور ستائش کے بھوکے ہیں۔ اگر دونوں ایک دوسرے کی بڑھ چڑھ کر تعریف کریں تو یہ بندھن نہایت کامیاب ہو سکتا ہے۔

اسد اور اسد کا ساتھ

دونوں ایک ہی عنصر سے تعلق رکھتے ہیں اور یکساں خصوصیات کے حامل ہیں۔ جب دو گرم جوشاور فراخ دل پیار کرنے والے اور وفادار دل آپس میں ملتے ہیں تو ایک شان دار رشتہ قائم ہوتا ہے۔ دو شیروں کی جوڑی یقینا کوئی شان دار کارنامہ انجام دے سکتی ہے، کیوں کہ دونوں فطری طور پر بہت دلیر اور مضبوط ہیں اور ہر قیمت پر ایک دوسرے کا تحفظ کریں گے مگر اس رشتے میں کچھ خطرات بھی موجود ہیں، وہ یہ کہ دونوں ہر کامیابی کا سہرا اپنے اپنے سر باندھنے کی کوشش کریں گے بلکہ ایک دوسرے کو یہ بھی جتانے کی کوشش کریں گے کہ ان کا حصہ زیادہ ہے۔ دونوں ہی پہلی پوزیشن کے حصول کے لیے ایک دوسرے کے مقابل صف آرا ہو سکتے ہیں۔ دونوں اپنی پرستش چاہیں گے تو پھر کون کس کی پرستش کرے گا؟ دونوں کو ایک دوسرے سے اپنی تعریف کی خواہش رہے گی مگر یہ کام دونوں کے لیے بہت مشکل ہے۔ یہ وہ وجوہات ہیں جو ان دو شیروں کی جوڑی کے درمیان شروع ہونے والے کسی زبردست معرکہ آرائی کو بنیاد فراہم کر سکتی ہے۔ اس کے علاوہ بھی کچھ دوسرے بہت سے ڈرامے بھی ہوتے رہیں گے، کیوں کہ اسد افراد بنیادی طو رپر ایک ڈرامائی شخصیت کے حامل ہوتے ہیں مگر آخر میں ان کی گرم جوشی اور محبت کرنے والی فطرت کا بول بالا ہوگا اور دونوں شیر اپنے فیاضانہ اوصاف کے باعث ایک دوسرے کو معاف کر دیں گے اور ساری تلخی بھول جائیں گے۔

اسد اور سنبلہ کا ساتھ

اسد کا عنصر آگ اور سنبلہ کا مٹی ہے۔ دونوں عناصر کے درمیان کوئی باہمی تعلق نہیں ہے۔ علم نجوم کے قواعد کی رو سے یہ دونوں جڑواں بروج ہیں۔ دونوں کے درمیان کوئی خاص زاویہ نظر موجود نہیں ہے۔ سنبلہ شخصیت اپنے مثبت پہلوﺅں میں قاعدے قانون کی پابند، باطنی خوبیوں کی مالک، نپاتلا اور درست انداز رکھنے والی صاحب استدلال، معقولیت پسند، نرم مزاج، تجزیہ نگار اور صاحب امتیاز ہوتی ہے جب کہ اس کی منفی خصوصیات میں تنقید و نکتہ چینی، بے لچک ہونا، غیر ہم درد، جھگڑالو، کنجوس و عیب جو ہونا، حد سے زیادہ شرم وحیا شامل ہے۔
اسد اور سنبلہ کی جوڑی خاصی دشواریوں میں مبتلا ہو سکتی ہے۔ا سد کا ڈرامائی پہلو سنبلہ پر کچھ زیادہ ہی بھاری ہوگا۔ سنبلہ چاہتا ہے کہ اسے سکون سے رہنے دیا جائے۔ وہ خاموشی اور سکوت پسند کرتا ہے۔شور شرابے اور ڈرامے بازی سے اسے سخت نفرت ہے، لہٰذا اسد کی ڈرامے بازی اسے مایوس کر سکتی ہے یا وہ اس سے چڑ سکتا ہے۔ دوسری طرف سنبلہ کا بے حد محتاط رویہ اور متلون مزاجی اسد کی آزاد روی کو کچل سکتی ہے۔ شاید یہ دونوں ایک دوسرے کے لیے نہیں بنے، لہٰذا یہ رفاقت کسی ناخوش گوار انجام سے دوچار ہو سکتی ہے۔ شیر کو سنبلہ کی مسلسل تنقید، تجزیہ کاری، نکتہ چینی، غلط کو صحیح کرنے کی فطرتپاگل کر سکتی ہے۔ سنبلہ بھی شیر کی اس خواہش اور لگاتار مطالبے پر اس سے متنفر ہو سکتا ہے کہ اس کی اطاعت کی جائے۔ دونوں اگر جیو اور جینے دو کے اصول پر عمل کرتے ہوئے ایک دوسرے سے ایسے مطالبات نہ کریں جنہیں پورا کرنا ان کے لیے ممکن نہیں ہو سکتا تو یہ رفاقت کامیابی کے ساتھ جاری رہ سکتی ہے۔

اسد اور میزان کا ساتھ

یہ آگ اور ہوا کا ساتھ ہے۔ دونوں عناصر کے درمیان زبردست موافقت موجود ہے۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابق دونوں موافقت کا زاویہ نظر رکھتے ہیں۔ میزان شخصیت اپنے مثبت پہلوﺅں میں شائستہ اور باسلیقہ، متوازن اور انصاف پسند، مصلحت اندیش، ذہین اور دل کش اور ہوشیار ہے جب کہ اس کی منفی خصوصیات میں سہل روی اور کسی حد تک سستی و کاہلی، تذبذب، خودغرضی اور بے ثباتی، علیحدہ پسندی شامل ہے۔
اسد اور میزان کا اتحاد نہایت شان دار اور مفید ثابت ہو سکتا ہے۔ دونوں ناقابل تصور بلندیوں کو چھو سکتے ہیں اور ایک دوسرے کے لیے نہایت فائدہ بخش ثابت ہو سکتے ہیں۔ یہ تعلق بہت نشاط انگیز، ہیجان خیز اور خیال آفریں ہے۔ اسد میزان کو وہ استقامت بخش سکتا ہے جس کی اسے ضرورت ہے اور میزان اسد کے اسٹائل کے شعور کی تعریف کرتا ہے۔ا سد کو میزان کی بے تکلفانہ اور دوستانہ روش اور رویہ پسند ہے، البتہ اگر اسد بہت زیادہ حکم چلانے لگے اور بدمزاجی اور بددماغی کا مظاہرہ کرنے لگے تو میزان خاموشی کے ساتھ اس سے دور ہو جائے گا۔ا سد اور میزان دونوں ہی خوب صورت چیزوں کے شائق ہیں اور انہیں حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ دونوں جذباتی اور خوش امید ہیں۔ اسد بھی اتنی ہی توجہ چاہتا ہے جتنی میزان چاہتا ہے اور اگر وہ دونوں ایک دوسرے پر توجہ دیں تو ان کا یہ سفر رفاقت کسی اونچ نیچ کے بغیر جاری رہ سکتا ہے۔ا سد کو یہ سمجھنے کی ضرورت ہوگی کہ میزان کو کوئی فیصلہ کرنے میں دشواری اس وجہ سے نہیں ہوتی کہ وہ اس کی صلاحیت نہیںر کھتا بلکہ اس کا سبب یہ ہے کہ وہ انصاف کے تقاضے نہایت دیانت داری سے پورے کرنا چاہتا ہے۔ میزان کو اپنی حد سے بڑھی ہوئی خوش فکری پر قابو رکھنے کی ضرورت ہوگی۔

اسد اور عقرب کا ساتھ

یہ آگ اور پانی کا ساتھ ہے۔ دونوں عناصر کا اختلاف ظاہر ہے۔ علم نجوم کے قواعد کی روسے بھی ان میں مخالفانہ زاویہ¿ نظر موجود ہے۔ عقرب شخصیت اپنے مثبت پہلوﺅں میں باحوصلہ اور باوسیلہ، خوداعتماد اور پُرکشش، حساس اور مصلحت پسند، ہوشیار اور چالاک ہیں، جب کہ اپنی منفی خصوصیات میں غلبہ اور تسلط پسند، حاسد اور عیار، بے رحم اور مغرور، خودتشدد اور طنز کرنے والی ہوتی ہیں۔
شیر(اسد) کو بچھو(عقرب) بہت گہرا اور پُراسرار محسوس ہو سکتا ہے۔ دائرئہ بروج کے یہ دونوں نشان اپنے عقائد کے معاملے میں بے حد مغلوب الغضب ہیں اور اگر دونوں کے درمیان امن و سکون کا رشتہ قائم کرنا ہو تو دونوں کو کسی سمجھوتے پر متفق ہونا پڑے گا، بصورت دیگر کسی ناخوش گوار صورت حال کا سامنا کرنا پڑے گا۔ پیشہ ورانہ سطح پر یہ رفاقت بہت سودمند ہو سکتی ہے لیکن قریبی اور گہرے نجی تعلقات کے لیے نہیں، کیوں کہ یہ دونوں ہی بروج حاکمیت پسند ہیں۔ شیر کھلم کھلا بڑے شاہانہ طمطراق سے حکومت کرتا ہے اور اپنے احکامات کی فوری تعمیل چاہتا ہے جب کہ عقرب اپنی فطرت کے عین مطابق حکومت کرنے کی خفیہ خواہش رکھتا ہے۔ وہ ایک ماہر منصوبہ ساز اور زبردست چالیں چلنے والا ہے، نیز گھات لگا کر اچانک حملہ کرنا پسند کرتا ہے۔ اس کا کھیل نہایت شاطرانہ ہوتا ہے، لہٰذا ان دونوں رفیقوں کو بہت محتاط رہنے کی ضرورت ہے، کیوں کہ کچھ کہا نہیں جا سکتا کہ کس کا داﺅ چل جائے۔ دونوں بروج ثابت، یعنی غیر تغیر پذیر ہوتے ہیں۔ ان کی دائمی رفاقت خاصی ضرر رساں اور نقصان دہ ثابت ہوگی۔

اسد اور قوس کا ساتھ

دونوں کا عنصر آگ ہے جو ایک دوسرے کے لیے تقویت کا باعث ہے۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابق دونوں میں دوستی کا زاویہ نظر موجود ہے۔ قوس شخصیت اپنے مثبت پہلوﺅں میں بے خوف اور صاف گو، باحوصلہ، آزاد رو، متجسس اور ذہین، فراخ دل، آرزومند، فطرت کی شائق ہوتی ہے جب کہ اپنے منفی پہلوﺅں میں ضرورت سے زیادہ خوداعتماد، شیخی خور، پُرتشدد، مبالغہ آرا، بے اصول اور اکھڑ اور بے عقلی کا مظاہرہ کرنے والی ہے۔
اسد اور قوس کی رفاقت سودمند ہے۔ دونوں ہی فیاض اور بے چین فطرت کے مالک ہیں۔ دونوں سرگرم اور تھوڑے سے امارت پرست ہیں۔ قوس مہم جوئی کے لیے ہر وقت تیار رہتا ہے اور اسد بھی ہر بات کے لیے آمادہ نظر آتا ہے۔ چناں چہ دونوں سفر اور سیر و سیاحت سے خوب لطف اندوز ہو سکتے ہیں۔ قوس نہایت شگفتہ مزاج ہے اور اسد اس بات کو پسند کرتا ہے۔ سچی بات تو یہ ہے کہ دونوںایکدوسرے میں بے حد کشش محسوس کرتے ہیں اور دونوں کا ایک دوسرے سے دل نہیں بھرتا۔ دونوں ہی مشورہ قبول نہیں کرتے اور تجربات سے سیکھنا پسند کرتے ہیں۔ دونوں پیسہ کمانے کے معاملے میں تیز ہیں اور انتہائی درجے کے آزادی پسند بھی ہیں، یعنی ایک دوسرے کو تنہا چھوڑ سکتے ہیں۔ بہرحال یہ رفاقت بھرپور اور ہم آہنگ ہوتی ہے۔

اسد اور جدی کا ساتھ

اسد کا عنصر آگ اور جدی کا مٹی ہے۔ دونوں عناصر کے درمیان کوئی تعلق خاص نہیں ہے۔ یہی صورت حال علم نجوم کے قواعد کے مطابق بھی ہے۔ جدی شخصیت کے مثبت پہلو عملیت اور کارگزاری، مستقل مزاجی، ہم دردی، بلند کرداری، خاموش طبعی اور محتاط روی ہے، جب کہ منفی پہلو شک اور سردمہری، خودغرضی اور مزاحمت، ضد، خودسری، زودرنجی اور یاسیت ہے۔
اسد اور جدی کی جوڑی مثالی نہیں ہو سکتی۔ شیر کی شاہانہ انا اور بکری کی خندہ پیشانی اور زودرنجی دونوں کے درمیان ایک نمایاں تضاد ہے، البتہ مادی سطح پر ان دونوں کی یکجائی، دولت، شہرت اور عزت کے حصول میں مددگار ثابت ہو سکتی ہے اور دولت تو ایسی چیز ہے جسے دونوں ہی پسند کرتے ہیں، دونوں ضدی ہیں۔ اگر ٹکراﺅ کی نوبت آجائے تو دونوں میں سے کوئی کبھی اپنے موقف سے پیچھے ہٹنے کے لیے تیار نہ ہوگا، لہٰذا شیر اور بکری اگر ایک گھاٹ پر پانی پینا چاہیں تو دونوں کو ایک دوسرے کو سمجھ کر کچھ الاﺅنس دینا ہوں گے۔

اسد اور دلو کا ساتھ

اسد کا عنصر آگ اور دلو کا ہوا ہے۔ ہوا آگ کو جلنے میں مدد دیتی ہے اور آگ کی حرارت فعالیت بخشتی ہے۔ دونوں عناصر کے درمیان فائدہ بخش ربط و ضبط موجود ہے۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابقدونوں بروج ایک دوسرے سے ساتویں نمبر پر، یعنی مقابلے کے برج ہیں اور ساتواں خانہ شراکت اور تعلقات کا ہے۔ ایک دلو شخصیت کی مثبت خصوصیات میں ایمان داری اور سچائی کی تلاش، ہر دل عزیزی، حق گوئی، ہم دردی اور مہربانی، تخلیقی صلاحیتیں اور وجدانی کیفیات، کشادہ ذہنی اور ملنساری نمایاں ہیں جب کہ منفی پہلوﺅں میں انوکھا پن، متلون مزاجی، سرکشی، غیرروایتی طور طریقے اور انداز، سنکی یا وہمی ہونا، جلد بدل جانا وغیرہ شامل ہیں۔
اسد اور دلو کی جوڑی ایک پُراسرار بندھن کے زمرے میں آتی ہے لیکن ان کے بارے میں حتمی طو رپر کچھ نہیں کہا جا سکتاکہ یہ کب کیا کر گزریں گے، کیوں کہ دونوں جتنا ایک دوسرے کی طرف کھنچتے ہیں، اتنا ہی ایک دوسرے سے دور بھاگتے ہیں۔ دونوں کے لیے ایک دوسرے سے کچھ نہ کچھ سیکھنا ضروری ہے۔ شیر (اسد) دلو سے تھوڑی سی عاجزی اور انکساری سیکھ لیتا ہے جو اپنی غلطی تسلیم کرنے میں ہمیشہ کشادہ دلی اور اعلیٰ ظرفی کا مظاہرہ کرتا ہے اور دلو اسد سے تھوڑی سی گرم جوشی کا مظاہرہ کرنا سیکھ سکتا ہے، کیوں کہ دونوں برج اپنی ماہیت میں جامد، یعنی غیرتغیرپذیر ہیں، لہٰذا جب دونوں کے نکتہ¿ نظر میں اختلاف پید اہو جائے تو اس کا دور ہونا آسان کام نہیں۔ ذہانت اور حیرت انگیز ترقی یافتہ ذہنی ساخت ان دونوں بروج کا طرئہ امتیاز ہے۔ دونوں ہی حیرت سے دوچار ہو کر بہت خوش ہوتے ہیں۔

اسد اور حوت کا ساتھ

یہ آگ اور پانی کا ساتھ ہے جو عناصر کے اعتبار سے متضاد خصوصیات کا حامل ہے۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابق دونوں کے درمیان کوئی زاویہ محبت اور دوستی موجود نہیں۔ حوت شخصیت کے مثبت پہلوﺅں میں آزاد خیالی، حساسیت، ہم دردی، نرم مزاجی، ترقی پسندی، اثرپذیری، تخیلاتی ذہن وغیرہ شامل ہیں جب کہ منفی خصوصیات میں سست روی، بے پروائی، ڈھلمل یقینی، غیرواضح انداز، بے عملی، عدم توازن وغیرہ نمایاں ہیں۔
اسد سربراہی اور قیادت کرنا پسند کرتا ہے۔ چاہتا ہے کہ دوسرے عزت و تکریم سے اس کی تابع داری کریں۔ حوت چاہتا ہے کہ وہ کسی پر انحصار کرے، کوئی اس کا تحفظ کرے اور اس کی رہنمائی کرے۔ یہاں تک تو سب کچھ ٹھیک ہے، زندگی ہنسی خوشی گزر سکتی ہے لیکن ہوتا یہ ہے کہ مچھلی(حوت) شیر(اسد) کی مسلسل اناپرستی سے بہت جلد بے زار ہو جاتی ہے۔ شیر کی غضب ناکی اسے خوف زدہ رکھتی ہے، لہٰذا وہ شیر سے دور ہوتی چلی جاتی ہے۔ شیر کو اس کی وہمی طبیعت اور یاسیت پسندی اور اپنی ہی ذات کے سمندر میں غوطہ زن رہنا ہرگز پسند نہیں آئے گا۔ اس کے علاوہ مزید دیگر معاملات میں بھی وہابتری اور بدنظمی پھیلاتی رہتی ہے اور فطری طو رپر اس میں نفاست پسندی کا فقدان ہوتا ہے، لہٰذا دونوں کا تعلق خوش گوار اور پائیدار ہونا بڑا مشکل ہے۔
[/c]