Author Topic: Scorpio (Horoscope) برج عقرب  (Read 2759 times)

0 Members and 1 Guest are viewing this topic.

Offline Master Mind

  • 4u
  • Administrator
  • *
  • Posts: 4468
  • Reputation: 85
  • Gender: Male
  • Hum Sab Ek Hin
    • Dilse
    • Email
Scorpio (Horoscope) برج عقرب
« on: November 22, 2010, 04:46 AM »
عقرب
دائرئہ بروج میں عقرب آٹھواں برج ہے۔ علم نجوم میں اسے نسلی ارتقا، تخلیقی صلاحیت اور شراکتی مفادات سے منسوب کیا گیا ہے۔ آبی تکون(سرطان، عقرب اور حوت) کا یہ دوسرا برج ہے اور اپنی ماہیت میں ثبات و ٹھہراﺅ رکھتا ہے۔ لاشعوری طو رپر ایک صوفی، عارف، روحانیت سے جڑا ہوا ہے اورشعوری طو رپر تحقیق، تفتیش اور چھان بین سے وابستہ ہیں۔
عقرب کی حد اتصال اوّل

اگر آپ 22 اکتوبر سے 25 اکتوبر کے درمیان پیدا ہوئے ہیں تو گویا آپ برج میزان اور برج عقرب کے امتزاجی سنگم کے اثرات رکھتے ہیں۔ آپ کو ایک خالص عقربی نہیں کہا جا سکتا۔ آپ برج میزان کے اثرات بھی لے کر پیدا ہوئے ہیں اور ایک دل چسپی اور انوکھا مزاج رکھتے ہیں جو تضادات سے خالی نہیں۔ یوں سمجھ لیں جیسے کرم و ستم، محبت و نفرت، عیب و محاسن ایک انوکھے برتن میں جمع کر دیے گئے ہوں۔
تجسس اور جاسوسی یا سراغ رسی کی فطرت آپ کا خاصہ ہے۔ روح اور مادہ دونوں آپ کے لیے اہم ہیں۔ کسی کو بھی آپ نظرانداز نہیں کر سکتے۔ جذبات میں جوش اور گہرائی، اچھی کتابوں، عمدہ لباس، فن کارانہ امور اور دوسری پُرکشش چیزوں میں دل چسپی آپ کی بنیادی خصوصیات ہیں۔ آپ ڈاکٹر، وکیل، سرجن، سراغ رساں، ماہر صفائی، بیمہ کار، دواساز، کان کن، اداکار و فن کار بن سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ محقق، سائنس دان، ماہر نفسیات بھی ہو سکتے ہیں۔
عقرب شخصیت

برج عقرب کے زیراثر شخصیات کی زندگی میں روحانیت، شدت پسندی، احیائے اخلاق اور اقتصادیات کو بڑا دخل رہتا ہے لیکن اس برج کے مرکزی نکات تین ہیں۔
عقرب شخصیت کے تحت آپ کے اندر مہم جوئی کے جذبات بدرجہ اتم موجود ہیں اور پیدائشی طور پر ایسی قائدانہ صلاحیتیں ہیں جن کے ذریعے آپ اپنے لیے خصوصی مقام حاصل کرنے میں کامیاب ہو سکتے ہیں۔ آپ کے اندر بلا کی قوت برداشت اور ہمت ہے اور آپ ایک بے خوف انسان ہیں۔ بطور حریف آپ اپنے مخالف کے لیے نہایت بے رحم ہو سکتے ہیں لیکن دوستوں کے ساتھ آپ بہت پُرخلوص، وفادار، ہم درد اور تعاون کرنے والے ہیں۔
تجسس اور شک کے جذبات آپ کے اندر بہت ہیں چناں چہ آپ کو دھوکا دینا بہت مشکل ہے۔ آپ اپنی انا اور بڑائی پر کسی طرح کی آنچ برداشت نہیں کرتے، خواہ یہ کوئی شائبہ ہی کیوں نہ ہو اور اگر کبھی ایسی کوئی صورت حال پیش آجائے تو آپ بہت جلد روٹھ جاتے ہیں یا افسردہ ہو جاتے ہیں۔آپ کی ذہنی صلاحیتیں بہت زیادہ تیز ہیں اور وجدانی قوتیں بھی نہایت زود حس ہیں۔ ساتھ ہی ماہرانہ صفات سونے پر سہاگہ۔ آپ کو اپنی رازدارانہ طبیعت اور پے چیدگی و گھماﺅ پھراﺅ کی عادت سے اجتناب برتنا چاہیے۔ قول و فعل میں صاف گوئی اور کھلے پن کے ساتھ سیدھے سادے انداز میں کام کرنا آپ کے لیے ہمیشہ زیادہ مفید ہوگا۔
آپ کو روحانی یا ماورائی معاملات سے فطری لگاﺅ ہے۔ اگر یہ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا کہ آپ روحانیت یا ماورائی اور حقیقت یا مادیت کے دل چسپ امتزاج ہیں لیکن ساتھ ساتھ آپ کی مضبوط قوت ارادی اور مستقل مزاجی بھی ہے جو دو انتہاﺅں کے درمیان پل کا کردار ادا کرتی ہے۔ پھر بھی کبھی یہ ہو سکتا ہے کہ آپ کی زندگی پر کچھ خودساختہ نقصان دہ اثرات کا سبب یہی دو خوبیاں بن جائیں۔ آپ وقتاً فوقتاً اداسی اور رنج و غم میں مبتلا ہوتے رہتے ہیں اور یہ بھی آپ کے برج کی قدرتی خصوصیت ہے۔ اس کے ساتھ ہی آپ کے برج میں علاج معالجہ اور دوسروں کے دکھ درد کم کرنے کی خصوصیات بھی شامل ہیں۔ آپ میڈیکل کے شعبے میں بہت کامیاب ہو سکتے ہیں۔
عقرب کا عشرہ اوّل

ہر برج کا پھیلاﺅ تیس درجے تک ہے۔ اسے دس دس درجے کے تین مساوی حصوں میں تقسیم کیا جائے تو ہر حصہ آپ کی عقربی شخصیت کے نئے پہلو اجاگر کرتا ہے۔ ہر حصے کو عشرہ یا دریجان کہتے ہیں۔ اگر آپ 24 اکتوبر سے یکم نومبر تک کسی بھی تاریخ کو پیدا ہوئے ہیں تو آپ کا تعلق پہلے عشرےکے عقربی افراد سے ہے اور آپ کے حاکم سیارے پلوٹو اورمریخ ہیں۔ آپ کی شخصیت پر برج عقرب کے بھرپور اثرات پڑ رہے ہیں۔ آپ عمدہ قوت ارادی رکھتے ہیں لیکن ساتھ ہی ساتھ سنگ دلی، تکبر اور چال بازی کی خصوصیات میں اضافہ ہو سکتا ہے۔ آپ نہایت سرگرم اور پُرجوش ہیں لیکن آپ کو دوسروں پر اپنی مرضی مسلط کرنے سے گریز کرنا چاہیے اور صبر و برداشت کے ساتھ افہام و تفہیم کا راستہ اپنانا چاہیے۔
عقرب کا عشرہ دوم

اگر آپ کی تاریخ پیدائش 2 نومبر سے 11 نومبر تک ہے تو آپ کا ذیلی حاکم سیارہ نیپچون ہے، جو جدید علم نجوم میں برج حوت کا حاکم ہے اور پُراسراریت و ماورائیت اس سے منسوب ہیں۔ اکثر ماہرین نجوم برج حوت سے سیارہ مشتری کے تعلق کو بھی نظرانداز نہیں کرتے۔ وہ برج حوت پر نیپچون کے ساتھ مشتری کی حاکمیت کے نظریے کو بھی تسلیم کرتے ہیں۔ اس سلسلے میں ایک نظریہ یہ بھی ہے کہ برج حوت پر نیپچون کے اثرات و حاکمیت میں سیارہ مشتری شریک ہے۔ یہ صورت حال عقرب کے عشرئہ دوم میں پیدا ہونے والے افراد کی شخصیت و فطرت اور کردار میں عجیب و حیرت انگیز دل چسپیاں پیدا کر دیتی ہے۔ مشتری کے اثرات وسعت و ترقی کی علامت ہیں، بلند اور اعلیٰ اقدار کے حصول میں معاون ہوتے ہیں جب کہ نیپچون کو روحانی یا ماورائی قوتوں کا علم بردار کہا جاتا ہے۔ اس طرح اس عشرے میں پیدا ہونے والے افراد کی شخصیت نہایت پے چیدہ ہو جاتی ہے، جس کی تہ در تہ پرتیں ایک نیا ہی جہان حیرت رکھتی ہیں۔ ان لوگوں کی سب سے بڑی معرکہ آرائی خود اپنی ذات سے ہوتی ہے۔ ان کی منفی و مثبت صفات کے آثار کم عمری سے ہی نمایاں ہوتے ہیں۔ اپنے مقاصد کے حصول کے لیے یہ لوگ ہر قسم کی قربانی دے سکتے ہیں اور اپنے لیے کوئی نمایاں مقام پیدا کر سکتے ہیں۔ اگر یہ لوگ بہتر ماحول اور عمدہ تعلیم و تربیت سے مثبت طرزعمل پر گامزن ہو جائیں تو عظیم کارنامے انجام دے سکتے ہیں جب کہ اس کے برعکس منفی طرزعمل کا شکار ہو کر اپنے اور دوسروں کے لیے تباہی و بربادی کا سبب ہو سکتے ہیں۔
عقرب کا عشرہ سوم

اگر آپ کی پیدائش 12 نومبر سے 22نومبر تک کے عرصے میں ہوئی ہے تو آپ برج عقرب کے تیسرے عشرے سے تعلق رکھتے ہیں۔ اس عشرے کا ذیلی سیارہ قمر، یعنی چاند ہے، لہٰذا آپ نے اپنے حاکم سیارے مریخ کے اثرات کے ساتھ چاند کے اثرات بھی قبول کیے ہیں۔ آپ ناصرف خودآزاد رہنا پسند کرتے ہیں بلکہ دوسروں کے لیے بھی آزادی پسند کرتے ہیں لیکن چاند کے اثرات آپ کو بہت زیادہ جذباتی، تصوراتی اور غیرمستقل مزاج بناتے ہیں۔ آپ کو رنج و ملال، مایوسی اور مستقبل کے واہموں سے بچنا چاہیے اور ہر قسم کے دباﺅ سے ذہن کو آزاد رکھنا چاہیے۔ آپ بطور خاص بین الاقوامی معاونت، سفر اور پبلسٹی کی خصوصی صلاحیت رکھتے ہیں۔ آپ کے رومانی تصورات میں عجیب سی پُراسراریت پائی جاتی ہے۔ ایک پُرکشش مقناطیسی شخصیت کے ساتھ آپ ہم دردانہ فطرت کے مالک ہیں۔
برج عقرب کی مثبت اور منفی خصوصیات

برج عقرب کے مثبت پہلوﺅں میں مضبوط قوت ارادی، خوداعتمادی اور مقناطیسیت، مصلحت اندیشی، گہرائی یا پُراسراریت، ہمت و حوصلہ، بے خوفی، ہوشیاری، مہارت، برداشت، بالغ نظری، ذی فہمی اور محنت شامل ہیں جب کہ منفی پہلوﺅں میں جوشیلا اور جذباتی پن، زودرنجی و ذکی الحسی، حسد، فتنہ پردازی، کینہ پروری، انتقام جوئی، غرور و تسلط یا غلبہ پانے کا رجحان، طنزیہ رویہ، تشدد، جلن اور مکاری شامل ہیں۔
مثبت یا منفی پہلوﺅں میں کمی یا زیادتی کسی بھی عقربی مرد یا عورت کے انفرادی زائچہ پیدائش میں کچھ دوسرے عوامل پر مکمل انحصار کرتی ہے۔ اگر پیدائش کے وقت سیارگان سعد اور قوی اثرات زائچے پر ڈال رہے ہوں تو مثبت خصوصیات نمایاں ہوں گی اور منفی خصوصیات دب جائیں گی جب کہ اس کے برعکس صورت حال میں منفی پہلو نمایاں ہوں گے۔
عقرب بچہ

یہ بچے جسمانی طور پر مضبوط ہوتے ہیں لیکن بے حد حساس ہونے کی وجہ سے اپنے اردگرد کے ماحول کا اثر جلد قبول کر لیتے ہیں، لہٰذا والدین کو چاہیے کہ ان کی تربیت پر خصوصی توجہ دیں۔ اپنے بچپن میں یہ ماحول کے جو بھی منفی یا مثبت اثرات قبول کرلیں گے، وہ بڑے ہونے کے بعد بھی ان کی شخصیت کا حصہ رہیں گے۔
عقرب بچوں کو غصہ بڑی جلدی آتا ہے اور وہ کینہ خو، انتقام پرور ہوتے ہیں۔ ہر معاملے میں عقربی شدت پسندی ان میں نمایاںہوتی ہے۔ والدین کو چاہیے کہ ان کے جذباتی معاملات کو کبھی نظرانداز نہ کریں۔ رقابت، شرارت، عداوت، ضد، شک و شبہ جیسے جذبات کا رجحان پروان نہ چڑھنے دیں۔ یہ بچے نہایت قابضانہ مزاج رکھتے ہیں، سب کچھ اپنے لیے چاہتے ہیں، ورنہ کچھ نہیں چاہیے والا منفی رویہ اپناتے ہیں۔و الدین کو ان کے دیگر بہن بھائیوں سے تعلقات میں توازن برقرار رکھنے میں سخت دشواری کاسامنا ہوتا ہے۔
ان بچوں کو مرغن غذائیں نہیں دینی چاہئیں۔ حبس اور گھٹن زدہ کمروں میں یہ بیمار ہو سکتے ہیں۔ تازہ ہوا اور بھرپور نیند ان کے لیے بہت ضروری ہے۔ خون اور پیشاب سے متعلق امراض یا نفسیاتی امراض انہیں لاحق ہو سکتے ہیں۔
« Last Edit: March 19, 2013, 05:35 AM by Master Mind »

Offline Master Mind

  • 4u
  • Administrator
  • *
  • Posts: 4468
  • Reputation: 85
  • Gender: Male
  • Hum Sab Ek Hin
    • Dilse
    • Email
Re: Scorpio (Horoscope) برج عقرب
« Reply #1 on: March 19, 2013, 05:35 AM »

باپ

بحیثیت باپ عقربی افراد ایک خوددار، حساس اور سرگرم فطرت رکھتے ہیں۔ انہیں اپنی اولاد کے ساتھ سختی اور شدت پسندی سے گریز کرنا چاہیے، ورنہ صورت حال فائدے کے بجائے نقصان دہ بھی ہو سکتی ہے۔ بعض اوقات ان کے حساس بچے خوف کا شکار بھی ہو جاتے ہیں اور ان سے کھنچاﺅ محسوس کرتے ہیں۔ یہ اپنے بچوں کے لیے محبت، شفقت اور مہربانی کا گہرا جذبہ رکھتے ہیں، شاید اسی لیے ان کی تربیت کے مراحل میں سخت رویہ اپنا لیتے ہیں جو ان کے اور اولاد کے درمیان نظریاتی اختلاف کا باعث بن سکتا ہے۔ انہیں تحمل، برداشت سے کام لینا چاہیے۔


عقرب ماں

عقرب خواتین بحیثیت ماں اپنے بچوں کے لیے بہت مہربان، دوستانہ طرزعمل اور عمدہ خصوصیات کی حامل ہوتی ہیں مگر بعض اوقات یہ کچھ زیادہ ہی توقعات بڑھا لیتی ہیں۔ ان میں مادرانہ غرور و افتخار زیادہ ہوتا ہے۔ عقرب باپ کی طرح یہ بھی ضرورت سے زیادہ سخت ہو جاتی ہیں اور کبھی کبھی انتہاپسندانہ طرزعمل اختیار کر لیتی ہیں۔ انہیں جنریشن گیپ(تفاوتِ نسلی) کو دور کرنے کی کوشش کرنی چاہیے۔

عقرب شوہر

بحیثیت شوہر عقرب کی شدت پسندی عروج پر ہوتی ہے۔ وہ اپنی بیوی کو اپنی جاگیر سمجھتے ہیں اور کبھی کبھی انہیں بیوی کا اپنے ماں باپ اور بہن بھائیوں یا دیگر رشتے داروں سے زیادہ میل جول بھی ناگوار گزرنے لگتا ہے۔ وہ یہ برداشت نہیں کرتے کہ ان کی بیوی ان کی مرضی کے خلاف ایک قدم بھی اٹھائے۔ وہ چاہتے ہیں کہ ان کی ہر خواہش کے سامنے سر تسلیم خم کر دیا جائے اور مکمل فرماں برداری کا مظاہرہ کیا جائے۔
عقرب مرد شوہر کی حیثیت سے کامیاب رہتا ہے اور اپنے خاندان کی کفالت و حفاظت کی پوری صلاحیت رکھتا ہے لیکن اس کی نجی خواہشات اور جذ باتی انداز فکر اکثر و بیشتر گھریلو ماحول میں کشیدگی کا سبب بنتا ہے۔ وہ یہ بھول سکتا ہے کہ اس کی بیوی کس قدر اس کی خدمت گزار ہے، جب شک و شبہے کے سانپ اس کے تصور میں لہرا رہے ہوں۔ اس کی ایک وجہ یہ بھی ہے کہ وہ اپنے بیوی بچوں سے دل کی گہرائیوں کے ساتھ سچی محبت کرتا ہے لیکن رقابت کے زہر کا علاج اس کے پاس نہیں ہے۔

عقرب بیوی

عقرب عورت اگرچہ عیش و آرام کی طالب ہوتی ہے اور خوش مزاجی بھی اس کی فطرت میں شامل ہے، لہٰذا ایک خوب صورت گھر اس کی آرزو ہوتا ہے۔ وہ اپنے کردار میں صاف اور بے خوف ہوتی ہے اور ہر کام نہایت دل چسپی و دل جمعی سے کرتی ہے۔ شوہر کی ہر طرح دل وجان سے وفادار ہوتی ہے۔ محبت اور نفرت کے حوالے سے اس کے جذبات عقربی خصوصیات کے مطابق انتہاپسندانہ اور شدید ہوتے ہیں۔ وہ جس سے محبت کرتی ہے، اسے دیوتا بنا کر دل کے مندر میں رکھتی ہے اور اس کی پوجا کرتی ہے لیکن یہ بھی چاہتی ہے کہ اس کا دیوتا اس کی محبت اور وفاداری کی قدر کرے۔ اس میں کسی اور کو اس کا شریک نہ بنائے۔ رقابت کا جذبہ اور قابضانہ فطرت کے تقاضے اس میں بھی شدید ہوتے ہیں۔ خیال رہے کہ عقرب بیوی، شوہر کی کم زوریوں کو کبھی معاف نہیں کرے گی۔ وہ اس کے اشاروں پر چلنے کے بجائے اسے اپنے اشاروں پر چلانے کی خواہش مند ہوگی مگر اس خواہش کی تکمیل وہ اعلانیہ طور طریقوں کے بجائے بڑے غیرمحسوس انداز میں کرتی ہے۔

عقرب دوست

جہاں تک آپ کی خودداری اور انا کا معاملہ ہے، آپ بہت حساس اور وفادارانہ خصوصیات کے مالک ہیں۔ بعض اوقات آپ ان معاملات میں حدود سے بھی تجاوز کر جاتے ہیں۔ آپ کو چاہیے کہ چھوٹی موٹی باتوں اور دوسروں کی کوتاہیوں کو نظرانداز کر دیا کریں، خاص طور سے اپنے دوستوں کے معاملے میں۔
بحیثیت دوست آپ ایک آتش گیر مادے کی طرح ہیں، جو کہیں بھی اور کبھی بھی ایک زورداردھماکے کا سبب بن سکتا ہے، کیوں کہ آپ کی فطرت میں رازداری اور امتیازی طرزعمل پوشیدہ ہیں۔ آپ ایک ایسے دوست ہیں جس کے بارے میں آپ کا کوئی بھی دوست درست اندازے لگانے میں عموماً ناکام رہتا ہے۔ ان حالات میں آپ کے خلوص اور دیانت داری کے باوجود آپ کے ساتھ بے وفائی یا فریب کے واقعات رونما ہو سکتے ہیں۔

عقرب اور حمل کا ساتھ

عقرب کا پانی اور حمل کا عنصر آگ ہے۔ اپنی ماہیت میں عقرب ثابت اور حمل تبدیل ہونے والی خاصیت رکھتا ہے۔ آگ اور پانی میں موافقت نہیں ہے۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابق برج حمل، عقرب سے چھٹا برج ہے اور عقرب حمل سے آٹھویں نمبر پر ہے۔ چھٹا خانہ صحت، ملازمت اور ماتحتی سے متعلق ہے اور آٹھواں خانہ حادثات و وراثت اور شراکت مفادات کا ہے۔ ان اصولوں کی بنیاد پر عقرب، برج حمل پر بالادستی رکھتا ہے جب کہ حمل کو عقرب سے خطرہ ہو سکتا ہے۔
حمل و عقرب دونوں سیارہ مریخ کے تحت ہیں اور مریخ ایک جنگ جو سپہ سالار ہے۔ وہ جنگ جویانہ صفات رکھنے والے(حمل و عقرب) ایک دوسرے سے برسرپیکار تو ہو سکتے ہیں، باہمی شراکت و محبت قائم نہیں کر سکتے۔ عقرب اپنا زہریلا ڈنک لیے ہر دم مقابلے کے لیے تیار، ہر معاملے میں پہلا مقام حاصل کرنے کا خواہش مند، آسانی سے شکست تسلیم نہ کرنے والا جب کہ ایک مینڈھا(حمل) ایک عقرب کے ساتھ اسی صورت میں گزارا کر سکتا ہے جب وہ جذباتی اور ذہنی فاصلہ برقرار رکھ سکے۔ عقرب کے ساتھ تعاون کرنا ہی حمل کے لیے سب سے مناسب راستہ ہے لیکن پھر بھی ان دونوں میں اگر مسابقت کی نوبت آئے تو شکست برج حمل والے کو ہی ہوگی۔ قابل توجہ بات یہ ہے کہ حمل شخصیت کبھی جھگڑے میں پہل نہیں کرتی، کسی بھی تنازع کی ابتدا عقرب کی طرف سے ہوتی ہے اور اس کےلیے وہ راہ بھی تلاش کر لیتا ہے۔ یہ ہمیشہ حملہ آور کی حیثیت اختیار کیے رہتے ہیں اور بہت ہوشیار و چالاک ہوتے ہیں۔ ان کی حملہ کرنے کی ترکیب بھی اپنی نوعیت میں انوکھی ہوتی ہے۔ حمل والے عقرب کی ان صلاحیتوںکو بھانپ لیتے ہیں اور پھر ان کے سامنے آنے سے گریز کرتے ہیں۔ عقرب افراد کو اگر نقصان پہنچایا جائے تو وہ اسے بھولتے نہیں لیکن ساتھ ہی یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ عقرب شخصیت اپنے ساتھ کی گئی مہربانی یا محبت کو بھی فراموش نہیں کرتی۔ بہرحال ان کی یکجائی کی صورت میں اگر کوئی جنگ نہ چھڑے تو بہتر ہے، کیوں کہ مینڈھے کی خصوصیت سینگ مارنا ہے اور اس کی ٹکر بہت زبردست ہوتی ہے جب کہ عقرب کا وار بہت خفیہ، ماہرانہ اور حیران کن ہوتا ہے۔ ان تمام پہلوﺅں کے پیش نظر یہ کوئی بہت اچھی جوڑی نہیں کہی جا سکتی۔

عقرب اور ثور کا ساتھ

پانی اور مٹی کا یہ میل بڑا بارآور ثابت ہوتا ہے۔ عقرب اور ثور میں عناصری موافقت کے ساتھ ماہیت کی بھی یکسانیت ہے۔ علم نجوم کے اصول کے مطابق یہ دونوں ایک دوسرے کے مدمقابل برج ہیں۔ ان میں شان دار شراکت بھی ممکن ہے اور معرکہ آرائی بھی۔ شراکت کی صورت میں یہ بہترین تعمیری و تخلیقی نتائج دیں گے اور معرکہ آرائی میں ایک دوسرے کے لیے نہایت سخت حریف ثابت ہوں گے۔
ثور شخصیت نرم دل، عمل پسند، مادہ پرست، فن کارانہ صلاحیت کی حامل، خود بیں، محتاط، صابر، قابل اعتماد ہوتی ہے۔ اس کے منفی پہلوﺅں میں ضد، ہٹ دھرمی، اکھڑپن، سستی و کاہلی، خودپرستی و تنگ نظری اور دوسروں کو زیراثر رکھنے کی خواہش شامل ہے۔
عقرب اور ثور میں بہت سی خصوصیات مشترکہ ہیں۔ یہ دونوں ایک دوسرے کی تعریف و ستائش کرتے ہیں اور دونوں مل کر ایک اکائی بن سکتے ہیں۔ عقرب میں وہ تمام خوبیاں ہیں جو ثور کو پسند ہوتی ہیں اور ثور(بیل) میں وہ خصوصیات پہلے سے موجود ہوتی ہیں جن کی عقرب تمنا کرتا ہے۔ یہ اور بات ہے کہ وہ اس حقیقت کا اقرار یا اعتراف نہ کرے۔ ثور میں وہ تحمل اور برداشت بھی موجود ہے جو عقرب چاہتا ہے۔ یہ دونوں مل کر اگر کوئی فیصلہ کرنا چاہیں تو ان کی جوڑی انتہائی کامیاب ہو سکتی ہے، خواہ یہ کاروباری معاونت و اشتراک ہو یا زندگی کا ساتھ، یعنی شادی مگر اس جوڑ میں ایک ”لیکن“ بھی موجود ہے، وہ یہ کہ ان دونوں کو ایک دوسرے کی خصوصیات، خوبیوں اور صلاحیتوں کو استعمال کرنے کی اہلیت حاصل کرنا ہوگی۔ ان دونوں میں وہ تمام خوبیاں موجود ہیں جن کی ایک دوسرے کو ضرورت ہے اورمادی نکتہ نظر سے یہ ایک عمدہ شراکت بن جاتی ہے، البتہ روحانی اور جذباتی طور پر ان میں کسی قدر تلخی کا بھی امکان ہے۔ بہرحال یہ ایک کامیاب جوڑی بن سکتی ہے، ازدواجی طور پر بھی اور کاروباری ضرورت کے تحت بھی۔
عقرب اور جوزا کا ساتھ

عقرب کا عنصر پانی اور جوزا کا ہوا ہے۔ دونوں میں کوئی باہمی ربط و ضبط نہیں۔ اپنی ماہیت میں بھی عقرب میں ٹھہراﺅ ہے اور جوزا تغیرپذیر۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابق جوزا عقرب سے آٹھواں برج اور عقرب جوزا سے چھٹے نمبر پر ہے، لہٰذا یہ دونوں ایک دوسرے کے لیے ضرررساں تو ہو سکتے ہیں، مفید نہیں۔
جوزا کی شخصیت کے مثبت پہلوﺅں میں حاضر جوابی، خوش طبعی، ہمہ گیری، ذہانت و ہوشیاری، موقع شناسی اور مصلحت اندیشی شامل ہے جب کہ منفی پہلو بے سلیقگی، خودپرستی، بے پروائی، یقین و اعتماد کی کمی، لاتعلقی، قوت برداشت کی کمی وغیرہ ہیں۔
عقرب اور جوزا کی یکجائی کا نظارہ بڑا دل چسپ ہوگا۔ قوت و برتری کا خواہاں عقرب اور بچوں جیسی فطرت والا جوزا باہم خوش نہیں رہ سکتے۔ عقرب کے نزدیک جوزا کی تغیرپذیری تعلقات میں پائیداری کے لیے مشکوک ہوگی اور جوزا، عقرب کی شدت پسندی سے خوف زدہ رہے گا۔ عقرب کا مزاج بنیادی طور پر تسلط پسندی کا ہوتا ہے اور ہر معاملے میں شدت پسند بھی۔ یہ لوگ ہر بات کو اس کے انجام تک لے جانا یا دیکھنا چاہتے ہیں اور نامکمل یا غیراطمینان بخش کام پر یقین نہیں رکھتے۔ اس کے مقابلے میں جوزا شخصیت آزادی پسند اور بے پروا ہے۔ اسے کسی بھی چیز یا عمل کے منطقی انجام تک پہنچنے یا پہنچانے کی گھبراہٹ نہیں ہوگی بلکہ کسی بھی معاملے میں انتظار و صبر کا عمل جوزا کے لیے تکلیف دہ ہوتا ہے اور وہ اس سے تنگ آجاتے ہیں۔اس کے علاوہ ان کی وفاداری بھی مشکوک رہتی ہے۔
[/c]


Offline Master Mind

  • 4u
  • Administrator
  • *
  • Posts: 4468
  • Reputation: 85
  • Gender: Male
  • Hum Sab Ek Hin
    • Dilse
    • Email
Re: Scorpio (Horoscope) برج عقرب
« Reply #2 on: March 19, 2013, 05:36 AM »

اور سرطان کا ساتھ

دونوں کا عنصر پانی ہے اور اس پانی کی روانی قابل دید ہوتی ہے۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابق عقرب، برج سرطان سے پانچواں برج ہے اور سرطان، عقرب سے نواں۔ گویا بچھو، کیکڑے کا محبوب ہے اور کیکڑا، بچھو کی قسمت۔ سرطان شخصیت کے مثبت پہلوﺅںمیں حساسیت، ہم دردی اور باطنی قوتیں، وفاداری، اصول پرستی، میانہ روی، تخیلاتی قوت، اثراندازی وغیرہ ہیں اور منفی پہلو من موجی، نمایاں احساس کم تری، غیریقینی مزاج، یاسیت پسندی، ہٹ دھرمی وغیرہ ہیں۔
عقرب اور سرطان ایک دوسرے کے لیے زبردست کشش رکھتے ہیں اور شاید تمام دیگر بروج کے مقابلے میں ان دونوں کی جوڑی سب سے زیادہ متاثرکن ہوتی ہے۔ یہ دونوں ناصرف اپنی بلکہ اپنے ساتھی کی خوبیوں اور خامیوں سے بخوبی واقف ہوتے ہیں۔ عقرب میں سرطان کے لیے ایکمقناطیسی کشش ہوتی ہے اور وہ عقرب کی تمام پوشیدہ خوبیوں کی طرف کھنچتا چلا جاتا ہے۔ دونوں ہی میں تحفظ یا عدم تحفظ کا احساس بہت زیادہ ہوتا ہے اور یقینی یا غیریقینی کی کیفیات سے دونوں یکساں متاثر رہتے ہیں۔

عقرب اور اسد کا ساتھ

عقرب پانی اور اسد کا عنصر آگ ہے، لہٰذا یہ آگ اور پانی کی شراکت ہوگی۔ اپنی ماہیت میں دونوں استحکام و ٹھہراﺅ رکھتے ہیں۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابق دونوں مخالف زاویہ¿ نظر رکھتے ہیں۔
اسد افراد خودپسند، تحکمانہ انداز رکھنے والے، پُراعتماد، ہم درد و مہربان، خودشناس، فراخ دل، فن کارانہ مزاج کے حامل ہوتے ہیں۔ ان کی شخصیت کے منفی پہلوﺅں میں غرور و تکبر، اناپسندی، ضرورت سے زیادہ خوداعتمادی اور شیخی، من موجی ہونا شامل ہے۔
ان دونوں بروج میں اپنے عقائد اور خیالات کے سلسلے میں بڑا جذباتی اور پُرجوش انداز پایا جاتا ہے۔ اگر دونوں کے درمیان ہم آہنگی اور پُرامن تعلقات قائم کرنے ہوں تو دونوں کو مصالحانہ انداز اپنانا ہوگا، کیوں کہ دونوں کی خصوصیات میں حکمرانی کا جذبہ موجود ہے، لہٰذا بہتر تعلقات اور باہم محبت کے قیام میں بڑی دشواری پیش آئے گی۔ اسد اپنی حاکمانہ و شاہانہ شخصیت کا کھلم کھلا اظہار کرتا ہے اور اپنی بالاتری پر سمجھوتا نہیں کرتا جب کہ عقرب یہی کام خفیہ طور پر کرنے کا عادی ہوتا ہے۔

عقرب اور سنبلہ کا ساتھ

عناصر کے اعتبار سے یہ پانی اور مٹی کا ساتھ ہے اور دونوں میں موافقت موجود ہے۔ علم نجوم کے قواعد کے مطابق سنبلہ، برج عقرب سے گیارہواں برج ہے جس کا تعلق امید و خواہشات سے ہے اور عقرب، برج سنبلہ سے تیسرے نمبر پر ہے۔ تیسرا خانہ تعلیم اور ذہنی سرگرمیوں، روزمرہ دل چسپی کے امور وغیرہ سے ہے۔
سنبلہ کی شخصیت کے مثبت پہلوﺅں میں باقاعدگی، باطنی قوت، معقولیت پسندی، تجزیہ نگاری اور باشعور ہونا ہے جب کہ منفی پہلو نکتہ چینی، حد بندی، کنجوسی، عیب جوئی، سخت دلی وغیرہ ہیں۔
عقرب اور سنبلہ کا اشتراک حقیقی معنوں میں مفید اور معنی خیز ہو سکتا ہے۔ ان دونوں بروج کے حامل افراد میں ایک دوسرے کی خوبیوں کو پہچاننے اور انہیں مزید اجاگر کرنے کی صلاحیت ہوتی ہے۔ سنبلہ کی خوبی یہ ہے کہ وہ عقرب کی قیادت اور برتری قبول کرنے کو تیار رہتا ہے اور عقرب، سنبلہ کی معقولیت پسندی اور باریک بینی کو اپنے لیے ڈھال سمجھتا ہے۔

عقرب اور میزان کا ساتھ

پانی اور ہوا کا یہ ساتھ عنصری طو رپر کوئی لگاﺅ نہیں رکھتا۔ علم نجوم کے قواعد میں یہ باہم جڑے ہوئے برج ہیں۔ میزان عقرب سے بارہویں نمبر پر ہے اور عقرب دوسرے نمبر پر۔ گویا میزان،عقرب کے لیے ایک روحانی و جذباتی کشش رکھتا ہے اور عقرب، میزان کے لیے مالی۔ میزان کی مثبت خصوصیات میں انصاف پسندی اور توازن، موقع شناسی اور باتدبیری، دل کشی و ذہانت، نظامت و فراست جب کہ منفی خصوصیات میں سہل پسندی و سست روی، تذبذب و پس و پیش، لاتعلقی و غیرمستقل مزاجی، خودغرضی و بے اعتباری شامل ہیں۔
عقرب کی فطرت فیصلہ کرنے اور مستحکم خیال رکھنے والی کی ہے جب کہ میزان ہر لمحہ ہر چیز کے اچھے اور برے، مفید اور نقصان دہ پہلوﺅں پر ہی غور کرتا رہتا ہے۔ گویا اس میں فیصلہ کرنے کی وہ صلاحیت نہیں جو عقرب میں ہے اور یہ کمی دونوں کے درمیان بہت بڑی الجھن پیدا کر سکتی ہے۔ عقرب میں مستقل متحرک رہنے کی صلاحیت ہے اور اس کی یہ عادت لوگوں کو اپنی طرف متوجہ ہی نہیں کرتی بلکہ انہیں محظوظ بھی کرتی ہے جب کہ میزان کی نفیس طبیعت اور ذوق کے لیے یہ عادت تکلیف دہ ثابت ہو سکتی ہے۔ ان تمام تضادات کے باوجود اگر عقرب اور میزان ایک دوسرے کی نفسیات و خواہشات اور عادات کو سمجھ سکیں اور ایک دوسرے کے خوف و خدشات کو دور کر سکیں تو یہ جوڑی معنی خیز ہو سکتی ہے۔

عقرب اور عقرب کا ساتھ

ایک عقرب شخصیت دوسری عقرب شخصیت کے ساتھ جو انداز اور طور طریقہ اختیار کر سکتی ہے، اس میں بہت سے خطرات پوشیدہ ہوتے ہیں، پھر بھی یہ اعتماد اس لحاظ سے نہایت دل چسپ اور اہم قرار دیا جا سکتا ہے کہ اس میں ایک ہی برج کی حامل دو شخصیات ایک دوسرے کو جانچنے، سمجھنے اور جاننے کے عمل سے گزرتی ہیں مگر یہ کہنا بھی مشکل ہے کہ ایک عقرب شخصیت کے بارے میں کس حد تک جانا جا سکتا ہے، کیوں کہ عقرب کی ادا خود کو پوشیدہ رکھنا یا رازداری سے کام لینا ہوتی ہے اور اس کے اپنے اصل خول سے باہر نکالنا آسان نہیں ہوتا۔ ہر بات یا معاملے کو مشکوک نظروں سے دیکھنے کی عادت کی وجہ سے انہیں ایک دوسرے پر بھروسا کرنے میں بھی بڑی مشکل پیش آتی ہے۔ یہ اپنے شریک یا مدمقابل کی نیت پر ہمیشہ شک کرتے ہیں، کیوں کہ بحیثیت عقرب یہ خوب جانتے ہیں کہ ان کا عقرب ساتھی ان سے بھی کچھ چھپا رہا ہے اور قابل بھروسا نہیں ہے۔ ایک اور حقیقت بھی بے حد اہم ہے کہ ایک عقرب کبھی نہیں بھولتا، خصوصاً اس حال میں جب کہ اسے دھوکا دیا جائے یا اس کی توہین کی جائے۔ ایسی صورت میں وہ انتقام کے بارے میں ضرور سوچے گا۔ ان تمام باتوں کے باوجود عقرب شخصیات کا ملاپ اس اعتبار سے یقینا دل چسپ ہے کہ وہ جو دل میں ٹھان لیں، کر کے رہتے ہیں اور اس معاملے میں سب سے اہم چیز ”قوت“ ہے، کیوں کہ قدرت نے ان کے اندر بے پناہ توانائی رکھی ہے، جس کی بدولت یہ ناممکن کو ممکن بنا سکتے ہیں۔ بہرحال ہم تو آپ کو دعا ہی دے سکتے ہیں، ”خدا آپ کو کامیابی عطا فرمائے۔“

عقرب اور قوس کا ساتھ

عقرب کا عنصر پانی اور قوس کا آگ ہے۔ گویا یہ آگ اور پانی کا کھیل ہے۔ علم نجوم کے قواعد کی رو سے یہ تحویلی برج ہیں۔ دوستی یا دشمنی باہم نہیں رکھتے۔ قوس عقرب سے دوسرا اور عقرب قوس سے بارہواں برج ہے۔ عقرب ایک قوس کے لیے روحانی، جذباتی و جنسی کشش کا باعث ہوگا جب کہ قوسایک عقرب کے لیے مالی و معاشی فوائد کے اعتبار سے پُرکشش ہوگا۔
عقرب کے دل میں یہ شک گھر کر سکتا ہے کہ یہ تیرانداز قوس شاید متلون مزاج اور دکھاوے کی محبت کرنے والا ہے۔ جب اسے ایسا محسوس ہو تو پھر وہ اس سے دور بھاگے گا۔ دوسری طرف تیر انداز قوس کو شاید عقرب کا اپنی ذات کے خول میں سمٹ کر بیٹھنا اور اس کی حد سے بڑھی ہوئی حاسدانہ طبیعت کی وجہ سے گھٹن کا احساس ہونے لگے۔ ایسی صورت میں وہ بھی عقرب سے دور بھاگنے کی کوشش کرے گا۔ قوس کی شخصیت آزاد رو اور ہنسی مذاق کی ہوتی ہے جب کہ عقرب شخصیت تعلق میں گہری سنجیدگی اور شدت چاہتی ہے۔ یہ دو متضاد کیفیات ہیں جو اگر یکجا کر دی جائیں تو نتائج کے بارے میں کوئی خوش گمانی نہیں ہونی چاہیے۔
عقرب اور قوس، دونوں کو صحت کے بارے میں زیادہ تشویش رہتی ہے، لہٰذا یہ دونوں اکثر مختلف عوارض یا خود کو زیادہ عرصے تک جوان رکھنے کی ترکیبوں پر تبادلہ خیال میں مصروف پائے جاتے ہیں۔ بس یہی ایک قدر مشترک دونوں میں نظر آتی ہے۔ قوس کی فطرت میں خوش مزاجی اور ہنسنا ہنسانا ہے، اس لیے وہ شکست میں بھی دکھ محسوس نہیں کرتا جب کہ عقرب کے اندر شکست کو برداشت کرنے کا مادہ بالکل نہیں ہے۔ یہ اندیشہ موجود ہے کہ عقرب کی متجسس طبیعت قوس کی خوش مزاج و آزاد منش ہستی کو کہیں ٹکڑے ٹکڑے نہ کر دے۔

عقرب اور جدی کا ساتھ

عقرب کا عنصر پانی اور جدی کا مٹی ہے۔ یہ عنصری تعلق موافق ہوتا ہے، یعنی یہ دونوں عنصر باہم دوست ہیں۔ علم نجوم کے قواعد کی روشنی میں بھی عقرب اور جدی ایک موافق زاویہ رکھتے ہیں۔ عقرب سے جدی تیسرا برج ہے اور جدی سے عقرب گیارہواں، گویا عقرب کے لیے اس کا جدی ساتھی اس کے ذہن کی روشنی ہے اور عقرب، جدی کے لیے امید و خواہشات کا مرکز۔ اس دل چسپ صورت حال میں جب یہ دونوں یکجا ہوتے ہیں تو چند چھوٹے موٹے اختلافات کے علاوہ ان کی جوڑی کامیاب رہتی ہے لیکن کبھی کبھی کوئی چھوٹا سا اختلاف بھی خطرناک صورت اختیار کر سکتا ہے، کیوں کہ یہ دونوں اپنے بنیادی نظریات پر مشکل ہی سے کوئی سمجھوتا کرتے ہیں۔
حیرت کی بات تو یہ ہے کہ ان دونوں برجوں سے متعلق افراد کا نصب العین تقریباً یکساں ہوتا ہے۔ دونوں کی توقعات اور خواہشات ایک جیسی ہوتی ہیں اور دونوں ہی ایک جیسے خواب دیکھتے ہیں مگراپنے مقاصد کے حصول کے لیے دونوں مختلف راستے اختیار کرتے ہیں۔ عقرب محسوس کرتا ہے کہ جدی کا کردار بہت مزاحمت کرنے والا ہے اور وہ اس کے راستے میں رکاوٹیں پیدا کر رہا ہے اور جدی کو یہ خیال ہوتا ہے کہ اگر وہ عقرب کی مرضی کے مطابق نہ چلے تو اسے خواہ مخواہ پریشان کیا جاتا ہے۔ جدی افراد فطرتاً زیادہ مہم جو اور جرات مند ہوتے ہیں اور ان کی خواہش ہوتی ہے کہ ان کا ساتھی عقرب ان کی طرح ہی بلند پرواز ہو۔
عقرب اور جدی دونوں ہی بڑی ذاتی اور انفرادی زندگی کے حامل ہوتے ہیں مگر ان دونوں میں سے عقرب ذرا زیادہ ملنے جلنے اور بات چیت کا عادی ہوتا ہے جب کہ جدی بالکل خاموش اور تنہائی پسند ہوتا ہے۔ بعض اوقات عقرب اپنے ساتھی جدی کو اپنے ساتھ، اپنی راہ پر لگانے میں کامیاب بھی ہوجاتا ہے۔ وہ جدی کی مزاحمت، خاموشی اور تنہائی کی دیوار توڑنے کے لیے اپنی دم کا زہریلا کوڑا استعمال کرتا ہے، یعنی طنزیہ زہریلی باتیں کرنے لگتا ہے۔ یہ صورت حال جذباتی و رومانی فضا کو مکدر کر کے ذہنی عدم موافقت کا سبب بن سکتی ہے۔ اگر اس سے پرہیز کیا جائے تویہ جوڑی بہت کامیاب اور آسودہ ثابت ہوگی، کیوں کہ دونوں کے خیالات، خواب اور آرزوئیں تقریباً یکساں ہوتی ہیں۔

عقرب اور دلو کا ساتھ

عناصر کے اصول پر پانی اور ہوا باہم کوئی رشتہ نہیں رکھتے اور علم نجوم کے قواعد میں عقرب اور دلو ایک مخالف زاویہ بناتے ہیں۔ عقرب سے دلو چوتھا برج ہے اور عقرب دلو سے دسویں نمبر پر ہے۔ زائچے کا چوتھا خانہ گھریلو زندگی سے متعلق ہے اور دسواں پیشہ ورانہ سرگرمیوں سے۔ کسی جذباتی اور دماغی اتحاد کے لیے یہ دو متضاد سمتیں ہیں، اس لیے کہا جا سکتا ہے کہ یہ جوڑی شراکتی اور ازدواجی اتحاد کے لیے موزوں نہیں ہے۔
عقرب اور دلوکا اتحاد قدم قدم پر ناخوش گواری لا سکتا ہے اور یہ عموماً دیرپا اور مضبوط تعلق نہیں ہوتا۔ ان دونوں کے درمیان قریبی گہرے تعلقات پیدا ہونا بہت مشکل ہوگا۔ دلو بہت آزادمنش لوگ ہوتے ہیں جب کہ عقرب بہت زیادہ قابضانہ فطرت رکھنے والے حساس افراد۔ دلو شخصیات کے ذہنی تصورات مختلف سمتوں اور آسمانوں میں پرواز کرتے ہیں اور انہیں بہت زیادہ کسی کے قریب ہو کر اس کا پابند رہنا بہت تکلیف دہ محسوس ہوتا ہے۔اس کے برعکس عقرب افراد بہت حساس اور خاصی حد تک حاسدانہ طبیعت کے مالک اور دوسروں کو اپنا مطیع یا زیر اثر رکھنے کے خواہش مند ہوتے ہیں۔ اب ان کے شریک حیات اگر دلو ہوں جو کہ خود آزادرو، آزاد خیال اور گھومنے پھرنے کے عادی، شوقین مزاجہوتے ہیں توپھر عقرب شخصیت کا خون کھولنا شروع ہو جائے گا۔ اس کا غصہ قدرتی بات ہوگی، نتیجہ ظاہر ہے کہ شدید اختلاف کی صورت پیدا ہو جائے گی۔
عقرب اور دلو برج والے دونوں شکی مزاج ہوتے ہیں اور ایک دوسرے کے بارے میں بہت محتاط بھی۔ یہ دونوں کبھی ایک دوسرے پر اعتمادنہیں کرتے، کیوں کہ دنیا کے بارے میں دونوں ہی کا نکتہ¿ نظر بالکل مختلف ہوتا ہے۔ ایک کو دوسرے کے عمل کی گہرائی یا وجوہات نظر بھی نہیں آتیں۔ اس صورت میں ان دونوں کی جوڑی کو کامیاب بنانا یا دونوں میں محبت و لگاوٹ پیدا کرنا ایک امرمحال ہے، لہٰذا ان کے اتحاد کی سفارش نہیں کی جا سکتی۔

عقرب اور حوت کا ساتھ

دائرئہ بروج کی آبی تکون کا عقرب دوسرا اور حوت تیسرا برج ہے۔ دونوں کا عنصر پانی ہے۔ عقرب اپنی ماہیت میں ثابت اور حوت تغیرپذیر ہے۔ علم نجوم کے قواعد کی روشنی میں یہ باہم موافقت رکھتے ہیں۔ حوت، برج عقرب سے پانچواں اور عقرب، برج حوت سے نواں برج ہے۔ پانچواں خانہ محبت، انعام، اولاد وغیرہ سے متعلق ہے اور نواں خانہ قسمت و مستقبل کی منصوبہ بندی اور عقائد و نظریات ہے۔ ان دو سیال صفت بروج میں ایک دوسرے کے لیے بڑی کشش ہوتی ہے، خاص طور پر عقرب، حوت کا دیوانہ ہو سکتا ہے اور مچھلی بھی بچھو کو اپنی قسمت سمجھ سکتی ہے۔ وہ اسے ایک آسان ہدف نظر آتا ہے جو آہستہ روی کے ساتھ اسی کی جانب بڑھ رہا ہوتا ہے۔ پہلی نظر کی محبت و پسندیدگی کا کلیہ ان دونوں پر صادق نظر آتا ہے۔ دونوں ایک دوسرے کے لیے ایک طرح کا فوری اور قوی مقناطیسی اثر رکھتے ہیں، گویا یہ ایک شدید محبت کرنے والی جوڑی بنتی ہے۔
عقرب اور حوت ایک دوسرے کو بھرپور طور پر سمجھتے ہیں اور ایک دوسرے کی طبیعت، احساسات اورخیالات سے بھی فطری طو رپر باخبر ہوتے ہیں۔ یہ ایک عجیب سا روحانی اور جذباتی تعلق ہوتا ہے۔ عقرب(بچھو) اپنے ساتھی حوت(مچھلی) کو تحریک دلاتا ہے اور حوت کو عقرب میں اپنے خوابوں کی تعبیر کا عکس نظر آتا ہے۔ ان دونوں میں اپنے اپنے خواب و خیال پر ایک دوسرے سے بات چیت اور تبادلہ خیال کی صلاحیت موجود ہے۔ یہ اور بات ہے کہ کسی تبادلہ خیال کے بغیر بھی وہ ایک دوسرے کے جذبات سے بخوبی واقف ہوتے ہیں۔ پھر بھی کسی موقع پر اگر ذہنی مسابقت کا مرحلہ آہی جائے تو حوت کا پلہ بھاری رہتا ہے۔ بہرحال ایک حیرت انگیز مخالفت اگر پیدا ہو تو ان دونوں کے درمیان مالی معاملات میں ہی ہو سکتی ہے، کیوں کہ حوت ایک قربانی دینے والا، سخی، طبیعت کا خرچیلا فرد ہے جب کہ عقرب بعض معاملات میں ذرا کنجوس یا سوچ سمجھ کر خرچ کرنے والا ہے۔ حوت کو کل کی پروا نہیں ہوتی جب کہ عقرب مستقبل کے بارے میں بہت زیادہ فکرمند رہتا ہے اور اس کے تاریک پہلوﺅں پر خصوصی نظر رکھتا ہے۔ اس وجہ اختلاف کے علاوہ ان دونوں میں کوئی تضاد پیدا نہیں ہوتا اور یہ ایک بہترین جوڑی ثابت ہوتی ہے
[/c]