Author Topic: پاکستان کی گیارہ رنز سے جیت  (Read 162 times)

0 Members and 1 Guest are viewing this topic.

Offline ahmed

  • Sr. Member
  • *
  • Posts: 1305
  • Reputation: 10
  • Gender: Male
    • Email
پاکستان کی گیارہ رنز سے جیت
« on: February 27, 2011, 12:11 AM »


سری لنکا کے دارالحکومت کولمبو میں ورلڈ کپ دو ہزار گیارہ کے گروپ اے کے میچ میں پاکستان نے سری لنکا کو گیارہ رنز سے شکست دے دی ہے۔

شاہد آفریدی کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔ انہوں نے چونتیس رنز دے کر چار وکٹیں حاصل کیں۔

پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا۔ پاکستان نے مقررہ پچاس اوورز میں سات کھلاڑیوں کے نقصان پر دو سو ستتر رنز بنائے۔

کلِک تفصیلی سکور کارڈ

کلِک میچ کی تصاویر

سری لنکا نے اننگز کا آغاز پراعتماد طریقے سے کیا۔ لیکن پہلی وکٹ گرنے کے بعد سری لنکا کی ٹیم مشکلات کا شکار ہو گئی۔

سری لنکا کی پہلی وکٹ 76 کے مجموعی سکور پر گری جب تھرنگا کو شاہد آفریدی نے کیچ آؤٹ کیا۔ تھرنگا نے 43 گیندوں میں 33 رنز سکور کیے جن میں چھ چوکے شامل تھے۔

پاکستان کے کپتان شاہد آفریدی نے سری لنکا کو ایک اور دھچکا اس وقت دیا جب انہوں نے دلشان کو اکتالیس رنز پر بولڈ کردیا۔ دلشان نے پچپن گیندوں میں 41 رنز سکور کیے۔ انہوں نے پانچ چوکے مارے۔

پاکستان کی جانب سے شعیب اختر نے تیسری وکٹ حاصل کی جب انہوں نے جے وردھنے کو صرف دو رنز پر بولڈ کردیا۔ سری لنکا کا مجموعی سکور پچانوے رنز تھا۔

شاہد آفریدی نے پاکستان کو ایک اور کامیابی سے ہمکنار کیا جب ان کی بولنگ پر سماراویرا ایک رن بنا کر سٹمپ ہو گئے۔

سنگاکارا اور سلوا نے سکور کو 169 رنز تک پہنچایا۔ چونتیسویں اوور میں سنگاکارا کو سٹمپ کرنے کا آسان موقع کامران اکمل نے کھو دیا۔

اس کے علاوہ پینتیسویں اوور میں عمر گل کی گیند پر رحمٰن نے سلوا کا آسان کیچ چھوڑ دیا۔

سنگاکارا کو شاہد آفریدی نے آؤٹ کیا۔ انہوں نے اکسٹھ گیندوں میں 49 رنز سکور کیے۔ انہوں نے دو چوکے اور ایک چھکا مارا۔

کپتان سنگاکارا کے آؤٹ ہونے کے بعد سے سری لنکا کی ٹیم مزید دوباؤ میں آ گئی۔ سلوا اور میتھیوز نے سکور میں چالیس رنز کا اضافہ کیا۔

میتھیوز 209 کے مجموعی سکور پر چالیس رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ ان کو بھی شاہد آفریدی نے آؤٹ کیا۔

سری لنکا کے ساتویں آؤٹ ہونے والے کھلاڑی پریرا تھے جن کو شعیب اختر نے آؤٹ کیا۔ انہوں نے آٹھ رنز سکور کیے۔

سری لنکا کی ٹیم کو آٹھواں نقصان 234 کے سکور پر اٹھانا پڑا جب کلاسکرا کو رحمٰن نے آؤٹ کیا۔ انہوں نے ایک رن بنایا۔

عمر گل نے کلاسکرا کو آؤٹ کیا۔ انہوں نے چودہ گیندوں میں چوبیس رنز بنائے۔

پاکستان کی جانب سے شاہد آفریدی نے چونتیس رنز دے کر چار وکٹیں حاصل کیں۔ شعیب نے دو جبکہ گل، حفیظ اور رحمٰن نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

پاکستان کی جانب سے مصباح الحق 83 رنز پر ناٹ آؤٹ رہے۔ انہوں نے 91 گیندیں کھیلیں اور چھ چوکے مارے۔

پاکستان کی ٹیم نے اننگز میں ایک چھکا اور پچیس چوکے مارے۔

سری لنکا کی جانب سے اننگز کا آغاز تھرنگا اور دلشان نے کیا۔


پاکستان کی پہلی وکٹ اٹھائیس رنز پر گری جب احمد شہزاد پریرا کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔ احمد نے تئیس گیندوں میں تیرہ رنز بنائے جس میں دو چوکے بھی شامل تھے۔

پاکستان کو دوسرا نقصان اس وقت اٹھانا پڑا جب مرلی دھرن کی پہلی ہی گیند پر رن بنانے کو کوشش میں حفیظ اور کامران دونوں ہی ایک ہی کریز میں جا پہنچے۔ محمد حفیظ نے اکتیس گیندوں میں بتیس رنز بنائے۔ انہوں نے چار چوکے مارے۔

پاکستان کی تیسری وکٹ ایک سو پانچ کے مجموعی سکور پر گری جب کامران اکمل 39 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے۔ ان کی وکٹ میتھیوز نے لی۔ کامران نے 45 گیندوں میں پانچ چوکے مارے۔

یونس خان اور مصباح الحق نے شراکت میں ایک سو آٹھ رنز کی پارٹنرشپ کی۔

یونس خان بہّتر رنز بنا کر ہراتھ کے ہاتھوں آوٹ ہوئے۔ انہوں نے یہ سکور 76 ویاندوں میں کیا جس میں چار چوکے بھی شامل ہیں۔ یہ ان کی ایک روزہ میچوں میں اکتالیسویں نصف سنچری ہے۔

پاکستان کی پینتالیسویں اوور میں پانچویں وکٹ گری۔ عمر اکمل پاور پلے کے دوران صرف دس رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ ان کو مرلی نے آؤٹ کیا۔

پاکستان کے کپتان شاہد آفریدی صرف سولہ رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ انہوں نے بارہ گیندیں کھیلیں اور تین چوکے مارے۔

عبدالرزاق جو شاہد آفریدی کے آؤٹ ہونے کے بعد آئے وہ صرف تین رنز سکور کر پائے۔

سری لنکا کی جانب سے پریرہ اور ہراتھ نے دو دو وکٹیں حاصل کیں جبکہ مرلی اور میتھیوز نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

میچ شروع ہونے سے قبل پریماداسا سٹیڈیم میں ٹاس جیتنے کے بعد پاکستانی ٹیم کے کپتان شاہد آفریدی نے کہا کہ پہلے بیٹنگ کرنے کے لیے بہترین وکٹ ہے۔ ’ہمارے لیے یہ بہت اہم میچ ہے۔ یہ ایک اچھی بیٹنگ وکٹ ہے۔ ہم اسی ٹیم کے ساتھ کھیل رہے ہیں جس نے کینیا کے خلاف کھیلا تھا۔ اس وکٹ پر 270 تک کا سکور اچھا ہے۔‘

سری لنکا کے کپتان سنگاکارا نے کہا کہ چمارا سلوا کپوگیدر کی جگہ کھیل رہے ہیں اور رنگنا مینڈس کی جگہ کھیل رہے ہیں۔ ’اس وقت میڈس کے ساتھ رسک لینا نہیں چاہیے۔ اس وکٹ پر 270 سے 280 تک کے سکور کا تعاقب کیا جا سکتا ہے۔‘

پاکستانی ٹیم میں محمد حفیظ، احمد شہزاد، کامران اکمل، یونس خان، مصباح الحق، عمر اکمل، شاہد آفریدی، عبدالرزاق، عمرگل، شعیب اختر، عبدالرحمان شامل ہیں۔

سری لنکا کی ٹیم میں کمارا سنگاکارا، دلشان، تھرنگا، جے وردھنے، سماویرا، چمارا سلوا، میتھوز، پریرا، کالو سیکرا، ہیراتھ اور مرلی دھرن شامل ہیں۔

پریماداسا سٹیڈیم میں پاکستان اور سری لنکا نے ایک دوسرے کے خلاف پانچ پانچ ون ڈے جیتے ہیں البتہ یہاں کھیلے گئے آخری تینوں ون ڈے میچوں میں جیت پاکستانی ٹیم کی ہوئی ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ دونوں ٹیمیں اٹھارہ سال کے طویل عرصے بعد ورلڈ کپ میں مدمقابل ہو رہی ہیں۔

دونوں کے درمیان آخری بار سنہ 1992 کے عالمی کپ میں مقابلہ ہوا تھا جو پاکستان نے چار وکٹوں سے جیتا تھا۔ اس کے بعد سے چار ورلڈ کپ میں دونوں کا سامنا نہیں ہوا ہے۔

ورلڈ کپ مقابلوں میں دونوں کے درمیان چھ میچز ہوچکے ہیں اور تمام کے تمام پاکستان نے جیتے ہیں۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی ایک روزہ میچ کی درجہ بندی کے مطابق پاکستان چھٹے نمبر پر ہے جبکہ سری لنکا تیسرے نمبر پر ہے۔

اس سے قبل دونوں ٹیموں نے ای دوسرے کے ساتھ 120 ایک روزہ میچ کھیلے ہیں۔ ان میں سے پاکستان نے ستر اور سری لنکا نے 46 میچ جیتے ہیں۔ ایک میچ ٹائی ہوا جبکہ تین میچ بغیر کسی نتیجے کے رہے۔

پریماداسا سٹیڈیم میں کُل 94 میچ کھیلے گئے جن میں سے صرف ایک میچ بغیر کسی نتیجے کے رہا۔ ان میچوں میں سے 55 میچ اس ٹیم نے جیتے جس نے پہلے بیٹنگ کی اور دوسری بیٹنگ کرنے والی ٹیم نے 33 میچ جیتے ہیں۔

دوست کو بھیجیں پرِنٹ کریں


Pakistan Zindabad




Offline King

  • Sr. Member
  • *
  • Posts: 1652
  • Reputation: 4
  • Gender: Male
Re: پاکستان کی گیارہ رنز سے جیت
« Reply #1 on: March 03, 2011, 03:55 AM »
thanks for sharing