Author Topic: بھارت: نو فیصد ترقی کی امید  (Read 172 times)

0 Members and 1 Guest are viewing this topic.

Offline ahmed

  • Sr. Member
  • *
  • Posts: 1305
  • Reputation: 10
  • Gender: Male
    • Email
بھارت: نو فیصد ترقی کی امید
« on: February 27, 2011, 12:24 AM »

بھارتی وزارتِ خزانہ کے مطابق یکم اپریل سے شروع ہونے والے مالی سال میں ملک کی معیشت ناسازگار حالات کے باوجود نو فیصد کی شرح سے ترقی کرےگی۔

بھارتی وزارتِ خزانہ کے مطابق رواں سال میں بجٹ خسارہ چار اعشاریہ آٹھ فیصد رہنے کی امید ہے۔

جمعہ کو حکومت کی جانب سے جاری کیے جانے والے اقتصادی سروے میں کہا گیا ہے کہ ملک کی معیشت میں تیز رفتار ترقی کا رحجان آئندہ دو برسوں میں بھی جاری رہے گا۔

سروے کے مطابق رواں سال میں زراعت، پیداوار اور سروسز میں ترقی کی شرح آٹھ اعشاریہ چھ فیصد رہے گی۔

بھارتی معیشت عالمی کساد بازاری کے باوجود آٹھ فیصد سے زیادہ کی شرح سے ترقی کر رہی ہے لیکن بے قابو افراطِ زر اور ملک میں بڑے بڑے گھپلوں کی خبروں سے کاروبار کا ماحول متاثر ہوا ہے۔ اس کے علاوہ تیل کی تیزی سے بڑھتی ہوئی قیمتوں کا اثر بھی اب ملک کے شیئر بازار پر نظر آرہا ہے جہاں جمعرات کو انڈیکس سولہ مہینوں میں سب سے نچلی سطح پر پہنچ گیا۔
سروے کے مطابق سنہ دو ہزار دس، گیارہ کے دوران زراعت میں پانچ اعشاریہ چار فیصد ترقی ہوگی جبکہ خشک سالی کی وجہ سے گزشہ مالی سال میں یہ نصف فیصد سے بھی کم تھی۔

نامہ نگار سہیل حلیم کے مطابق بھارت میں ہر سال بجٹ سے پہلے جاری کیا جانےوالا اقتصادی سروے بنیادی طور پر روال سال میں ملک کی اقتصادی حالت کا ایک رپورٹ کارڈ ہوتا ہے جس سے معلوم ہوتا ہے کہ کن شعبوں میں ترقی ہورہی ہے اور کون سے پیچھے جا رہے ہیں۔

بھارت میں بجٹ اٹھائیس فروری کو پیش کیا جائے گا۔

بھارتی معیشت عالمی کساد بازاری کے باوجود آٹھ فیصد سے زیادہ کی شرح سے ترقی کر رہی ہے لیکن بے قابو افراطِ زر اور ملک میں بڑے بڑے گھپلوں کی خبروں سے کاروبار کا ماحول متاثر ہوا ہے۔ اس کے علاوہ تیل کی تیزی سے بڑھتی ہوئی قیمتوں کا اثر بھی اب ملک کے شیئر بازار پر نظر آرہا ہے جہاں جمعرات کو انڈیکس سولہ مہینوں میں سب سے نچلی سطح پر پہنچ گیا۔

سروے کے مطابق افراطِ زر حکومت کے اندازوں سے ڈیڑھ فیصد زیادہ ہے۔ ماہرین کے مطابق بڑھتی ہوئی قیمتوں پر قابو پانے کے لیے حکومت کو قرضوں پر سود کی شرح بڑھانی پڑے گی جو کارپوریٹ دنیا کے لیے بری خبر ہے اور اسی وجہ سے غیر ملکی ادارہ جاتی سرمایہ کار بھارتی بازاروں سے اپنا پیسہ نکال رہے ہیں۔

سروے کے مطابق افراطِ زر حکومت کے اندازوں سے ڈیڑھ فیصد زیادہ ہے۔ ماہرین کے مطابق بڑھتی ہوئی قیمتوں پر قابو پانے کے لیے حکومت کو قرضوں پر سود کی شرح بڑھانی پڑے گی جو کارپوریٹ دنیا کے لیے بری خبر ہے اور اسی وجہ سے غیر ملکی ادارہ جاتی سرمایہ کار بھارتی بازاروں سے اپنا پیسہ نکال رہے ہیں۔
مبصرین کے مطابق انہیں بجٹ خسارے پر بہت تشویش ہے کیونکہ حکومت کے پاس گزشتہ برس کے بر عکس آئندہ سال میں آمدنی کے اضافی ذرائع نظر نہیں آرہے۔

مثال کے طور پر گزشتہ برس میں حکومت کو ٹو جی سپیکٹرم کی فروخت سے بھاری رقم حاصل ہوئی تھی اور اُس نے شیئر بازار میں تیزی کے رحجان سے فائدہ اٹھاتے ہوئے کئی بڑی سرکاری کمپنیوں میں نجکاری بھی کی تھی۔ جس سے کسی حد تک خسارہ کم کرنے میں مدد ملی لیکن شیئر بازار کی موجودہ حالت کو دیکھتے ہوئے اُس کے لیے آئندہ سال ایسا کرنا مشکل ہوگ


Pakistan Zindabad




Offline asad

  • Full Member
  • *
  • Posts: 414
  • Reputation: 0
    • Email
Re: بھارت: نو فیصد ترقی کی امید
« Reply #1 on: September 04, 2012, 01:41 PM »
 ysht ysht

Offline anjumkhan

  • Sr. Member
  • *
  • Posts: 1624
  • Reputation: 1664
  • Gender: Female
    • Email
Re: بھارت: نو فیصد ترقی کی امید
« Reply #2 on: September 06, 2012, 11:21 AM »
 bohatshukria

Bhlay Cheen lo muj sy meri jawani.
Mager muj ko lota do Bajpan ka sawan.
Wo kaghaz ki kashti wo barish ka pani.